جنگ جاری ہے

جنگ جاری ہے
جنگ جاری ہے

  

چھ ستمبرابھی ختم نہیں ہوا ،بھارت کے ساتھ ہماری جنگ جاری ہے جو سرحدوں سے بھی بہت آگے تک گھر گھر تک پہنچ چکی ہے ۔ ثقافتی محاذ پر لڑی جانے والی جنگ میں بھارت اب تک کیا کچھ کرچکا ہے ،قوم کو اس پر نظر ڈالنی چاہئے ۔بھارت عوام ،حکومت اور افواج کے مابین نفرتیں پھیلانے کے ایجنڈے پر کام کر رہا ہے ، یہ طریقہ واردات ملک سے محبت کرنے والے ایک عرصہ سے دیکھتے آ رہے ہیں۔جس کی ایک مثال بھارت کے نیوز چینل ہیں تو دوسری طرف ان کی فلمیں بھی ہیں ۔اب جب کہ سوشل میڈیا کا دور ہے تو یہ جنگ عوام کو فوج کے خلاف کر کے ،عوام کے دل میں فوج کے خلاف نفرت پیدا کرنے کی کوشش کر کے لڑ رہا ہے ۔

بھارت کی یہ کوشش حالیہ الیکشن میں کھل کر سامنے آئیں ۔ برسوں سے بھارت کی جانب سے کی جانے والی کوشش رنگ لائیں اور سوشل میڈیا پر ایک طوفان بد تمیزی اٹھ کھڑا ہوا ۔آفرین ہے پاک فوج پر جو اس سے دلبرداشتہ نہیں ہوئی اور صبر و تحمل سے اس کی نگرانی کرتی رہی ۔اس جنگ میں بھارتی میڈیا اور بدقسمتی سے پاکستانی میڈیا،چند صحافی ،بہت ہی بھو لی عوام جسے علم ہی نہیں تھا کہ وہ کٹھ پتلی بن کر دشمن کی زبان بول رہے ہیں ۔کچھ سیاسی عناصر نے بھی بھارت کا ساتھ دیا ۔

ہر سال کی طرح اس بار بھی یوم دفاع جوش و خروش سے منایا جائے گا ۔اس دن وہی بھولی عوام جو کل تک فوج کے خلاف نفرت پھیلانے میں پیش پیش تھی ، اس ایک مخصوص دن سب اپنی فیس بک، ٹویٹر اور انسٹاگرام پر میجر عزیز بھٹی شہید سمیت اس جنگ کے دیگر شہدا ء کی تصویریں لگا رہے ہوں گے۔ سوال یہ بھی پیدا ہوتا ہے کیاچھ ستمبر کو صرف تصویریں لگانے سے یا اسٹیٹس شیئر کرنے سے ہماری ذمہ داری پوری ہوجاتی ہے؟

جی ہاں ہمیں سوچنا ہو گا ہم کب تک بھارتی ثقافتی جنگ کا حصہ بنتے رہیں گے ۔یہ وہی بھارت ہے جس نے جب چاہا ہم پر سیلاب مسلط کر دیا ۔ہمارے سیاست دانوں اور میڈیا پر فوج کے خلاف بیان دینے کے لیے اربوں روپے خرچ کیے ۔جنہوں نے قدم قدم پر پاکستانیوں کو دھوکہ دیا ہے۔ وہ کشمیر کا معاملہ ہو یا مشرقی پاکستان ۔آئے روز سرحدی حدود کی خلاف ورزی کرنا ان کی فطرت بن چکا ہے ۔ہمیں اس کی سوشل میڈیا پر پھیلائی جنگ سے باہر نکلنا ہو گا ۔ہمیں اس سازش سے خود کو بچانا ہوگا ۔دشمن اس راز سے واقف ہو چکا ہے کہ پاکستان کی سب سے بڑی طاقت اس کی عوام کا فوج سے محبت کرنا ہے اور فوج کی سب سے بڑی طاقت اس کا جذبہ شہادت ہے ۔

شہادت ہے مطلوب و مقصود مومن

نہ مال غنیمت نہ کشور کشائی

اس وقت بھارت نے اپنا سارا زور پاکستانی عوام کے دل میں فوج کے خلاف نفرت پیدا کرنے پر لگایا ہوا ہے ۔اس لیے میری اپنے پاکستان کی محب وطن عوام سے اپیل ہے کہ اس یوم دفاع پر اس محاذ پر بھی ان کے دانت کھٹے کرنے کا وقت آ چکا ہے ۔یاد رکھیں ہمیں ہر سطح پر اپنے ملک کا دفاع کرنا ہوگا چاہے وہ معاشی ہو یا معاشرتی،چاہے نظریاتی ہویا سرحدی ہو ۔ہمیں ایک قوم بننا ہے، یاد رکھیں کہ اللہ کے بعد افواج ہماری محافظ ہیں، ملک فوج کے بغیر بچ نہیں سکتے ۔اپنی آزادی برقرار نہیں رکھ سکتے ۔سر اٹھا کر جی نہیں سکتے ۔ہمیں فوج کا مورال بلند رکھنا ہو گا ۔ یہ وہ بنیادی نقطہ ہے جسے صرف قومیں سمجھ سکتی ہیں۔ہمیں اپنے اندر آج بھی وہی جذبہ پیدا کرنے ضرورت ہے جب ایک ہجوم قوم بن گیا تھا ۔ہمیں دشمن کو بتانا ہو گا کہ ’’دشمن کو معلوم نہیں اس نے کس قوم کو للکارا ہے۔‘‘ بس قوم کو بھی چاہئے کہ وہ اس نعرے کی حیا کا تقاضا پورا کرے اور بھارت کی ثقافتی اور میڈیائی جنگ جیت کر ایک اور ستمبر منائے جو ہمیشہ تاریخ میں یادگار رہے گا ۔

نوٹ: روزنامہ پاکستان میں شائع ہونے والے بلاگز لکھاری کا ذاتی نقطہ نظر ہیں۔ادارے کا متفق ہونا ضروری نہیں۔

مزید :

بلاگ -