شاہ محمود قریشی کو ہرانے والے رکن پنجاب اسمبلی محمد سلیمان نعیم کی نا اہلی کا خطرہ پیدا ہو گیا

04 ستمبر 2018 (14:25)

لاہور (ویب دیسک) الیکشن کمیشن نے پنجاب اسمبلی کے رکن محمد سلمان نعیم کے مبینہ طور پر دو شناختی کارڈز استعمال کرنے کے معاملے پر نادرا اور پاسپورٹ آفس کو نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کر لیا۔

روزنامہ جنگ کے مطابق پیر کو الیکشن کمیشن میں پنجاب اسمبلی کے حلقہ پی پی 217 سے مخدوم شاہ محمود قریشی کو ہرانے والے والے آزاد اُمید وار محمد سلمان کی نااہلی سے متعلق کیس کی سماعت چیف الیکشن کمشنر کی سربراہی میں تین رکنی کمیشن نے کی۔ درخواست گزار شعیب ملک کے وکیل حسن مان نے موقف اختیار کیا کہ محمد سلمان دو نام استعمال کرتے ہیں اور ان کے دو شناختی کارڈ ہیں ، ان کے پہلے شناختی کارڈ میں ان کا نام سلمان نعیم ہے اور تاریخ پیدائش 28 جنوری 1994ء ہے جبکہ الیکشن میں حصہ لینے کے لئے کم از کم عمر 25 سال مقرر ہے ، اس شاختی کارڈ پر انہوں نے پاسپورٹ بنایا ، دوسرا شناختی کارڈ بعد میں بنایا لیکن پرانا پاسپورٹ بھی استعمال کر رہے ہیں.

17مئی 2018ء کو انہوں نے یو اے ای کا سفر پرانے پاسپورٹ پر کیا۔ وکیل نے کہا کہ نئے شناختی کارڈ میں ان کا نام محمد سلمان ہے اور تاریخ پیدائش یکم فروری 1993 ہے۔ نیا شناختی کارڈ 30 مئی 2017 ء کو بنا ، جس میں نام اور تاریخ پیدائش بھی تبدیل کی ہے، کاغذات نامزدگی میں ان کا نام محمد سلمان جبکہ ٹیکس ریٹرن میں سلمان نعیم ہے ، انہوں نے کاغذات نامزدگی جمع کرانے سے ایک دن پہلے ٹٰکس ایمنسٹی سکیم میں ساڑھے 17 کروڑ جمع کرائے ، جہاں ان کا نام سلمان نعیم ہے۔ چیف الیکشن کمشنر نے کہا کہ پرانے شناختی کارڈ کی تصویر میں ان کی داڑھی ہے اور نئے شناختی کارڈ کی تصویر میں داڑھی نہیں ہے۔ الیکشن کمیشن نے نادرا اور پاسپورٹ آفس کو نوٹس جاری کرتے ہوئے کیش کی سماعت 12 ستمبر تک ملتوی کردی۔ آزاد اُمید وار کے طور پر منتخب ہونے والے محمد سلمان نعیم تحریک انصاف میں شامل ہوگئے تھے۔

مزیدخبریں