غیر قانونی پلاٹ الاٹمنٹ کیس، نوا ز شریف کے ناقا بل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری 

غیر قانونی پلاٹ الاٹمنٹ کیس، نوا ز شریف کے ناقا بل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری 

  

 لاہور(نامہ نگار)احتساب عدالت کے جج اسد علی نے غیر قانونی پلاٹ الاٹمنٹ کیس میں گرفتار نجی میڈیا گروپ کے ایڈیٹر انچیف میر شکیل الرحمن کے کیس میں شریک ملزم سابق وزیراعظم میاں نواز شریف ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کر دیئے،فاضل جج نے وزارت خارجہ کو لندن میں پاکستانی ہائی کمیشن کے ذریعے میاں نواز شریف کے ناقابل ضمانت وارنٹ پر عمل درآمد کروانے کا حکم بھی دیاہے  عدالت نے میر شکیل الرحمن کے جوڈیشل ریمانڈ میں 17 ستمبر تک توسیع کرتے ہوئے سماعت ملتوی کردی،گزشتہ روزاحتساب عدالت کے جج اسد علی نے ملزم میر شکیل سمیت دیگر کیخلاف غیر قانونی پلاٹ الاٹمنٹ ریفرنس کی سماعت کی،نیب کی طرف سے سپیشل پراسکیوٹر حارث قریشی جبکہ میر شکیل الرحمن کی طرف سے امجد پرویز ایڈووکیٹ عدالت میں پیش ہوئے،ملزم ہمایوں فیض رسول کی طرف سے نوید رسول مرزا جبکہ ملزم میاں بشیر احمد کی طرف سے میاں الیاس ایڈووکیٹ پیش ہوئے،عدالت کو بتایا گیا کہ سابق ڈی جی ایل ڈی اے ہمایوں فیض رسول کی ٹانگ کا آپریشن ہونا ہے، عدالت سے استدعاہے کہ ملزم بیماری کی بنیاد حاضری سے استثنیٰ دیا جائے، میرشکیل الرحمن کے وکیل امجد پرویز نے کہا کہ میر شکیل کی ذاتی اشیاء واپس کرنے کا حکم دیا جائے،میرشکیل الرحمن کے وکیل نے کہا کہ ملزم کیخلاف ریفرنس دائر ہو چکا ہے، ملزم میر شکیل کے ذاتی موبائلز کا 1986ء کے وقوعہ سے کوئی تعلق نہیں، افاضل جج نے سرکاری وکیل سے استفسار کیا کہ ملزم کویہ چیزیں واپس نہ کرنے کی کوئی خاص وجہ ہے؟ جس سپیشل پراسیکیوٹر نیب حارث قریشی نے عدالت کو بتایا کہ  2 سام سنگ، ایک آئی فون ہے جس کا تجزیہ کروانا ہے، سرکاری وکیل نے عدالت سے استدعا کی میاں نواز شریف ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کئے جائیں اورمیر شکیل الرحمن کے خلاف فرد جرم عائد کر کے ٹرائل جلد شروع کیا جائے، عدالت میں تھانہ ماڈل ٹاؤن کے انسپکٹر بشیر احمد نے میاں نواز شریف کے وارنٹ گرفتاری کی رپورٹ عدالت میں پیش کر دی،پولیس رپورٹ میں کہاگیاہے کہ میاں نواز شریف ماڈل ٹاؤن رہائشگاہ پر موجود نہیں ہیں،ماڈل ٹاؤن کی رہائشگاہ پر مسلم لیگ (ن)کے ڈپٹی سیکرٹری عطاء تارڑ نے ملزم کے بیرون ملک ہونے کی تصدیق کی ہے، میاں نواز شریف کی رائیونڈ رہائشگاہ پر ملزم کے سیکرٹری نے کہا کہ نواز شریف 6 ماہ سے بیرون ملک ہے، عدالت نے وکلاء کے دلائل سننے کے بعد مذکورہ بالاحکم کے ساتھ کیس کی مزید سماعت آئندہ تاریخ پیشی تک ملتوی کردی۔نیب کی طرف سے   میر شکیل الرحمن،شریک ملزمان سابق وزیراعظم میاں نواز شریف، سابق ڈی جی ایل ڈی اے ہمایوں فیض رسول اور بشیراحمد کے خلاف ریفرنس دائر کیا جا چکا ہے،نیب کا موقف ہے کہ ملزم میر شکیل نے اس وقت کے وزیراعلی نواز شریف کی ملی بھگت سے ایک ایک کنال کے 54 پلاٹ ایگزمپشن پر حاصل کئے، ملزم کا ایگزمپشن پر ایک ہی علاقے میں پلاٹ حاصل کرنا ایگزمپشن پالیسی 1986ء کی خلاف ورزی ہے، میر شکیل الرحمن نے میاں نواز شریف کی ملی بھگت سے 2 گلیاں بھی الاٹ شدہ پلاٹوں میں شامل کر لیں، میر شکیل الرحمن نے اپنا جرم چھپانے کیلئے پلاٹ اپنی اہلیہ اور کمسن بچوں کے نام پر منتقل کروا لئے۔

وارنٹ گرفتاری 

مزید :

صفحہ اول -