فو ڈ سیفٹی ٹیموں کا مختلف شہروں  میں آپریشن، 344یونٹس کو نوٹس

  فو ڈ سیفٹی ٹیموں کا مختلف شہروں  میں آپریشن، 344یونٹس کو نوٹس

  

 ملتان (سپیشل رپورٹر) فوڈ سیفٹی ٹیموں نے ملتان، ساہیوال، بہاولپور، ڈیرہ غازی خان ڈویژن کے مختلف اضلاع میں کاروائیاں کرتے ہوئے428 فوڈ پوائنٹس کی چیکنگ کی جبکہ صفائی کی صورتحال بہتر نہ ہونے(بقیہ نمبر11صفحہ6پر)

 پر344فوڈیونٹس کو بہتری کے لیے نوٹسز جاری کیے گئے۔اس کے علاوہ سوئیٹس اینڈ بیکرز، کریانہ اور ملک شاپس سمیت 21فوڈ یونٹس کو سیل کیاگیا۔چیکنگ کے دوران 500لیٹر ملاوٹی دودھ، 250کلومینگو پلپ، 175کلو ملک پاؤڈر، 110ساشے گٹکا،28کلو بیکری آئٹمز، 33کلو مضر صحت خوراک، 20کلو مٹھائی، 20کلو مصالحہ جات، 20کلو مصنوعی مٹھاس تلف کی گئی جبکہ 15کلو مضرصحت گوشت برآمد کیاگیا۔ تفصیلات کے مطابق فوڈ سیفٹی ٹیمز نے کاروائیاں کرتے ہوئے ملتان میں کاروائی کرتے ہوئے حاجی سعید سوڈا واٹر، وہاڑی میں ماشاء اللہ سوڈا واٹر، اوکاڑہ میں شہزاد سوڈاواٹر کو دوسری کمپنیوں کی بوتلیں، ڈھکن کا استعمال کرنے،مشروبات کی تیاری میں مصنوعی مٹھاس کا استعمال کرنے پر سوڈا واٹر فیکٹریز کو سیل کیاگیا۔اس کے علاوہ ملتان میں آئی بی فوڈ پوائنٹ، خانیوال میں اشرف کریانہ سٹور،رحیم یارخان میں آر جے کریانہ کو گٹکا فروخت کرنے پر سیل کردیے گئے۔مزید ملتان میں شارجہ بیکری، اوکاڑہ میں قربان بیکری کو مصنوعات کی تیاری میں گندے انڈے اور ناقابل سراغ اجزاء کا استعمال کرنے پر سیل کیاگیا۔وہاڑی میں ماشاء اللہ چکن بروسٹ اینڈ باربی کیو، ساہیوال میں سجاد بشیرملک پوائنٹ، ڈی جی خان میں عمران ہوٹل، مٹھو کریانہ بہاولنگر میں المدینہ نان شاپ، علی چکن شاپ،راجن پور میں راشد کریانہ سٹور، طیب ڈیپارٹمیٹل سٹور، بسم اللہ کریانہ سٹوراور رحیم یارخان میں اصغر بٹ تکہ شاپ کو دی گئی ہدایات پر عمل نہ کرنے اور لائسنس فیس ادا نہ کرنے پر فوڈ یونٹس کو سربمہر کیاگیا۔اوکاڑہ میں بابا فرید ملک شاپ اینڈ فریش پوائنٹ کو سٹوریج ایریا میں مردہ حشرات پائے جانے اور رحیم یار خان میں عرفان پکل یونٹ سپائس سٹور کو پھپھوندی لگا اچار سٹور کرنے اور ناقابل سراغ سرخ مرچیں فروخت کرنے پر پکل یونٹ کو سیل کیا گیا۔ مزید براں ملتان میں 111،ساہیوال92،بہاولپور میں 101اور ڈی جی خان میں 124 فوڈ پوائنٹس کی چیکنگ کی گئی۔ملتان میں 10، ساہیوال میں 07، بہاولپورمیں 07اور ڈی جی خان میں 06فوڈ یونٹس کو 211,500روپے کے جرمانے عائد کیے گئے ہیں۔

نوٹس

مزید :

ملتان صفحہ آخر -