جی نہیں لگ رہا کئی دن سے

جی نہیں لگ رہا کئی دن سے
جی نہیں لگ رہا کئی دن سے

  

غم ہے بے ماجرا کئی دن سے

جی نہیں لگ رہا کئی دن سے

بے شمیمِ ملال و حیراں ہے

خیمہ گاہِ صبا کئی دن سے

دل محلے کی اس گلی میں بَھلا

کیوں نہیں غُل مچا کئی دن سے

وہ جو خوشبو ہے اس کے قاصد کو

میں نہیں مِل سکا کئی دن سے

اس سے بھی اور اپنے آپ سے بھی

ہم ہیں بےواسطہ کئی دن سے

شاعر: جون ایلیا

Gham Hay Be Maajra Kai Din Say

G Nahen Lag Raha Kai Din Say

Be Shameem  e  Malaal  o  Hairaan Hay

Khaima Gaah  e  Sabaa Kai Din Say

Dil Muhallay Ki Uss Gali Men Bhala

Kiun Nahen Gull Machaa Kai Din Say

Wo Jo Khushbu Hay Uss  K Qaasid Ko

main Nahen Mill Ska Kai Din Say

Uss Say Bhi Aor Apnay Aap Say Bhi

Ham Hen Be Waasta Kai Din Say

Poet: Jaun Elia

مزید :

شاعری -رومانوی شاعری -سنجیدہ شاعری -