کھلاڑیوں کے تبادلے پر پابندی کا فیصلہ سراسر ناانصافی ہے ¾ ہوسیپ ماریہ بارتو

کھلاڑیوں کے تبادلے پر پابندی کا فیصلہ سراسر ناانصافی ہے ¾ ہوسیپ ماریہ بارتو

لندن (اے این این)فٹ بال کلب بارسلونا کے صدر ہوسیپ ماریہ بارتومیو نے ورلڈ فٹ بال فیڈریشن کی جانب سے اس پر 14 ماہ تک کھلاڑیوں کے تبادلے پر پابندی کے فیصلے کو ناانصافی قرار دیا ہے۔سپین کے فٹ بال کلب بارسلونا کلب کے صدر کا کہنا ہے کہ وہ اس پابندی کے خلاف ایپل دائر کریں گے۔ہوسیپ ماریہ بارتومیو نے کہا ہم اس پابندی کے خلاف اپیل دائر کریں گے کیونکہ ہمارے خیال میں یہ پابندی ناانصافی پر مبنی ہے۔ہوسیپ ماریہ بارتومیو نے کہا کہ نوجوان کھلاڑیوں کو رجسٹر کرتے ہوئے ہسپانوی قوانین کی خلاف ورزی نہیں کی گئی۔ان کا کہنا ہے کہ ان کا کلب نوجوان کھلاڑیوں کو رجسٹر کرنے کی اپنی پالیسی تبدیل نہیں کرے گا۔

ہوسیپ ماریہ بارتومیو نے کہا کہ ورلڈ فٹ بال فیڈریشن کی بارسلونا کلب کے خلاف کی جانے والی تحقیقات ایک گمنام کھلاڑی کی جانب سے کی گئی گمنام شکایت پر مبنی ہے۔ان کا کہنا تھا کہ کوئی گمنام شخص بارسلونا کلب کی شہرت کو نقصان پہچانا چاہتا ہے۔خیال رہے کہ ورلڈ فٹ بال فیڈریشن کی تحقیقات کے مطابق بارسلونا کلب نے سنہ 2009 سے سنہ 2013 تک 18 سال سے کم عمر کے کئی کھلاڑیوں کو رجسٹرڈ کیا اور انھوں نے میچ بھی کھیلے۔فٹ بال کے عالمی ادارے کے مطابق بارسلونا کلب اور سپین کی فٹ بال فیڈریشن نے 10 کھلاڑیوں کے معاملے میں قواعد کی سنگین خلاف ورزی کی ہے۔ ورلڈ فٹ بال فیڈریشن کے قوانین کے مطابق صرف 18 سال سے زیادہ عمر کے کھلاڑیوں کے بین الاقوامی تبادلے کیے جاسکتے ہیں۔

مزید : میٹروپولیٹن 3