اپنی تصویریں خود اتارنے والے پاگل

اپنی تصویریں خود اتارنے والے پاگل
اپنی تصویریں خود اتارنے والے پاگل

  

شکاگو (بیورو نیوز) آپ اپنی تصویریں خود تو نہیں اتارتے۔ اگر آپ کا جواب ہاں میں ہے تو محتاط ہوجائیں کیونکہ یہ ایک ذہنی مرض بھی ہوسکتا ہے۔ امریکی ایسوسی ایشن برائے نفسیات کا کہنا ہے کہ جو لوگ اپنی تصویر خود بناتے ہیں ان کو ذہنی مرض لاحق ہوتا ہے۔ انٹرنیٹ کی دنیا میں ایسی تصویر کو ”سیلفی“ کہا جاتا ہے۔ ایسو لیشن کا کہنا ہے کہ اس ذہنی مرض کو ”سیلفٹ“ کہتے ہیں ایسولیشنی نے ایسے لوگوں کو تین زمروں میں رکھا ہے۔

-1 ہلکے سیلفٹ: ایسے لوگ دن میں اپنی کم از کم تین تصاویر لیتے ہیں لیکن انہیں انٹرنیٹ پر نہیں لگاتے۔

-2 شدید سیلفٹ: ایسے لوگ دن میں اپنی کم از کم تین تصاویر لے کر انٹرنیٹ پر چڑھاتے ہیں۔

-3 شدید سیلفٹ؛ ایسے لوگ ہروقت اپنی تصاویر بناتے ہیں اور دن میں کم از کم چھ بار تصاویر انٹرنیٹ پر لگاتے ہیں۔

ایسولیشن کا مزید کہنا ہے کہ ابھی تک اس بیماری کا کوئی علاج دریافت نہیں ہوا۔

مزید : ڈیلی بائیٹس