ہسپتال والوں نے ’دادی‘ کو جما دیا

ہسپتال والوں نے ’دادی‘ کو جما دیا
ہسپتال والوں نے ’دادی‘ کو جما دیا

  

لاس اینجلس (بیورو رپورٹ) ایک امریکی خاتون نے ایک ہسپتال کے خلاف دعویٰ دائر کیا ہے جس میں الزام لگایا گیا ہے کہ ڈاکٹروں کی کوتاہی کے باعث ان کی 80 سالہ ماں ماریہ اوریو کو زندہ جمادیا گیا۔ تفصیلات کے مطابق خاتون کو دل کے دورے کے بعد جولائی 2010ء میں مردہ قرار دے دیا گیا تھا۔ چند دن بعد دفنانے کے لئے نعش نکالی گئی تو معلوم ہوا کہ خاتون اوندھے منہ پڑی ہوئی تھی، اس کی ناک ٹوٹی ہوئی تھی اور چہرے پر زخموں کے نشانات تھے، اس پر اس کے شوہر اور آٹھ بچوں نے ہسپتال پر ڈیڈ باڈی ٹھیک طریقے سے نہ رکھنے کا الزام لگاتے ہوئے مقدمہ دائر کیا تھا۔ تاہم دسمبر 2011ء میں سماعت کے دوران ایک ڈاکٹر نے انکشاف کیا کہ اس خاتون کو زندہ سردخانے میں ڈال دیا گیا تھا اور وہ آنکھ کھلنے پر باہر نکلنے کی کوشش کرتی رہی جس کے باعث یہ زخم آئے۔ اس کے بعد خاندان نے یہ مقدمہ واپس لے کر دانستہ غفلت کا مقدمہ درج کردیا ہے۔ مقامی عدالت کے جج نے اس مقدمے کو یہ کہتے ہوئے برخاست کردیا تھا کہ اس واقعہ کو ایک سال سے زائد عرصہ بیت گیا ہے لہٰذا اب اس کی سماعت نہیں کی جاسکتی لیکن اب ہائیکورٹ نے کہا ہے کہ اس خاندان کے پاس ڈاکٹر کے انکشاف سے پہلے زخموں کی وجہ جاننے کا کوئی طریقہ نہ تھا۔ لہٰذا مقامی عدالت میں اس مقدمے کی سماعت پھر شروع ہوکی ہے۔

مزید :

تعلیم و صحت -