پنجاب یونیورسٹی سلیکشن بورڈ کی میٹنگ کیخلاف درخواست پر فیصلہ محفوظ

پنجاب یونیورسٹی سلیکشن بورڈ کی میٹنگ کیخلاف درخواست پر فیصلہ محفوظ

لاہور(نامہ نگار خصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے پنجاب یونیورسٹی سلیکشن بورڈ کی میٹنگ کیخلاف دائر درخواست پر فیصلہ محفوظ کر لیا، یونیورسٹی کے وکیل کا کہنا ہے کہ وائس چانسلر کی بیوی کو ترقی دینے کیلئے غور نہیں کیا گیا۔جسٹس عائشہ اے ملک نے سمیع عزیر خان سمیت یونیورسٹی کے 4اسسٹنٹ پروفیسروں کی درخواست پر سماعت شروع کی تو عدالت کو بتایا گیا کہ وائس چانسلر پنجاب یونیورسٹی ڈاکٹر مجاہد کامران نے لائ کالج کی پرنسپل اور اپنی بیوی شازیہ قریشی کو ترقی دینے کیلئے سلیکشن بورڈ کی میٹنگ بلائی ہے ، درخواست گزاروں کے وکلاءاحسن بھون اور ایڈووکیٹ حافظ انصار نے عدالت کو بتایا کہ 2007ءسے اسسٹنٹ پروفیسروں کی ترقیاں زیر التواءہیں مگر جیسے ہی وائس چانسلر کی بیوی ترقی کی اہل ہوئی ہے تو ڈاکٹر مجاہد کامران نے میٹنگ طلب کر لی ہے، انہوں نے عدالت سے استدعا کی کہ سلیکشن بورڈ کی میٹنگ کی کارروائی کو غیرقانونی قرار دیا جائے اور پنجاب یورنیورسٹی کو ہدایت کی جائے کہ پہلے ایل اسسٹنٹ پروفیسروں کو ترقی دی جائے، پنجاب یونیورسٹی کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ وائس چانسلر کی بیوی کو ترقی نہیں دے جار ہی، سلیکشن بورڈ کی میٹنگ میں اہل امیدواروں کو ہی ترقی دی جائے گی، جسٹس عائشہ اے ملک نے دلائل سننے کے بعد فیصلہ محفوظ کر لیا۔

مزید : صفحہ آخر