حکومت اور طالبان دونوں بے گناہ قیدیوں کو رہا کریں منورحسن

حکومت اور طالبان دونوں بے گناہ قیدیوں کو رہا کریں منورحسن

                           لاہور(اے این این )امیر جماعت اسلامی پاکستان سید منورحسن نے حکومت اور طالبان سے اپیل کی ہے کہ اعتماد کی فضا کو بہتر بنانے اور مذاکرات کی کامیابی کیلئے دونوں فریق ایک دوسرے کے بے گناہ قیدیوں کو اللہ کے نام پر فوری رہا کردیں اوردونوں طرف سے کسی بھی بات کو انا کا مسئلہ نہ بنایا جائے ،مذاکرات کی کامیابی ملک و ملت کی ناگزیر ضرورت ہے ،اسلام اور ملک دشمن قوتیں ہمارے خلاف سازشوں کا جال پھیلا رہی ہیں ،حکومت دشمن کے ایجنڈے کو ناکام بنانے کیلئے حکمت اور تدبر کا ثبوت دیتے ہوئے فہم و فراست سے کام لینا چاہئے اور ایسے مطالبات نہیں کرنے چاہئیں جن سے مذاکراتی عمل کو نقصان پہنچنے یا مذاکرات میں تعطل کا خدشہ ہو۔حکومت لاپتہ افراد کی بازیابی کے بارے میں بھی سنجیدگی کا ثبوت دے ۔ان خیالات کااظہار انہوں نے منصورہ میں مختلف وفود سے ملاقاتوں کے موقع پرگفتگو کرتے ہوئے کیا ۔سید منور حسن نے کہا کہ اس وقت پوری قوم کی نظریں مذاکرات پر لگی ہوئی ہیں اور عوام جلد از جلدکامیاب مذاکرات کی خوشخبری سننا چاہتے ہیں ،حکومت اور طالبان کو مذاکراتی عمل کو طوالت سے بچانا اور جلد از جلد فیصلے کی طرف بڑھنا چاہئے ،انہوں نے کہا کہ اگر چہ مذاکرات کو سبو تاژ کرنے کی کوششیں آہستہ آہستہ دم توڑ رہی ہیں لیکن جب تک حکومت اور طالبان کی مشترکہ لائحہ عمل تک نہیں پہنچتے اور مذاکرات کی کامیابی کا اعلان نہیں کرتے امن دشمن قوتیں اپنی شکست تسلیم نہیں کریں گی ۔انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم کی طرف سے مشترکہ اجلاس کی صدارت خوش آئند ہے ،انہیں حکومتی کمیٹی کو اپنے معاملات جلد فائنل کرنے کی ہدایت کرنی چاہئے اور طالبان کی طرف سے قیدیوں کی رہائی کے مطالبے کو تسلیم کرلینا چاہئے ،انہوں نے طالبان رہنماﺅں سے بھی اپیل کی کہ انہیں اپنی قید میں موجود معصوم شہریوں کو رہا کردینا چاہئے نیز اگر سابق وزیر اعظم یوسف رضاگیلانی کے بیٹے ان کی قید میں ہیں تو انہیں بھی رہا کر دیں ۔

مزید : صفحہ آخر