عالمی سیاست کے مرکزافغانستان میں صدارتی الیکشن: گنتی اور برتری کے دعوے ساتھ ساتھ

عالمی سیاست کے مرکزافغانستان میں صدارتی الیکشن: گنتی اور برتری کے دعوے ساتھ ...
 عالمی سیاست کے مرکزافغانستان میں صدارتی الیکشن: گنتی اور برتری کے دعوے ساتھ ساتھ

  

کابل (مانیٹرنگ ڈیسک )افغانستان میں صدارتی انتخابات میں پولنگ مکمل اور گنتی شروع ہوگئی ہے جس کے ساتھ ہی امدواروں نے اپنی اپنی کامیابی کے دعوے اور خواب سنانا شروع کردیے ہیں۔بی بی سی کے مطابق انتخابی عمل کے دوران ملک بھر میںاکا دکا واقعات کے علاوہ بیشتر علاقوں میں پرامن طریقے سے انجام پایا حالانکہ طالبان نے صدارتی انتخابات کے دوران طاقت کے ذریعے انتخابی عمل میں خلل ڈالنے کی دھمکیاں دی تھیں لیکن ان دھمکیوں اور شدید بارش کی پرواہ نہ کرتے ہوئے دارالحکومت کابل میں لوگوں نے بڑی تعداد میں حق رائے دہی استعمال کیا جن میں عورتوں کی بھی ایک بڑی تعداد شامل تھی۔پولنگ کے دوران ملک کے کسی حصے سے تشدد اور دہشت گردی کے کسی بڑے واقعے کی کوئی اطلاع موصول نہیں ہوئی جبکہ پولنگ کوبہت بڑا سیکیورٹی آپریشن قرار دیا جا رہا تھا۔ شدید بارش اور طالبان کی دھمکیوں کے باوجود کابل میں میلے کا سا سماں رہا۔ صدارتی انتخابات میں آٹھ امیدوار حصہ لے رہے اشرف غنی احمد زئی، زلمے رسول اور عبداللہ عبداللہ کو اہم امیدوار قرار دیا جا رہا ہے جب کہ دیگر امیدواروں میں محمد داو¿د سلطان زئی، قطب الدین جلال، گل آغا شیرزئی اور ہدایت امین ارسلہ شامل ہیں۔سب سے پہلے عبداللہ عبداللہ ے برتری کا دعویٰ کیا ہے ۔نو منتخب صدر طالبان کا تختہ الٹنے سے لیکر اب تک چلے آرہے صدر حامد کرزئی کی جگہ لیں گے ۔مبصرین کا خیال ہے کہ آگے مشکلات بھی ہیں اور افغانستان سے نیٹو کے انخلا کے تناظر میں طالبان کے خطرات بڑھ رہے ہیں۔

مزید : بین الاقوامی