خبردار! اگلی مرتبہ کسی بھی نوکری کیلئے درخواست جمع کرانے سے پہلے اچھی طرح سوچ لیں، یہ اقدام آپ کو دہشت گردوں کا نشانہ بناسکتا ہے کیونکہ۔۔۔ ایسا تشویشناک انکشاف منظر عام پر کہ جان کر پاکستانیوں کی پریشانی کی حد نہ رہے گی

خبردار! اگلی مرتبہ کسی بھی نوکری کیلئے درخواست جمع کرانے سے پہلے اچھی طرح سوچ ...
خبردار! اگلی مرتبہ کسی بھی نوکری کیلئے درخواست جمع کرانے سے پہلے اچھی طرح سوچ لیں، یہ اقدام آپ کو دہشت گردوں کا نشانہ بناسکتا ہے کیونکہ۔۔۔ ایسا تشویشناک انکشاف منظر عام پر کہ جان کر پاکستانیوں کی پریشانی کی حد نہ رہے گی

  



اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) انٹرنیٹ کا استعمال عام ہونے کے بعد ملازمت کی تلاش کے لئے مختلف ویب سائٹوں کا استعمال بھی عام ہوچکا ہے۔ انٹرنیٹ پر بے شمار ویب سائٹیں ملازمتوں کے اشتہارات شائع کرتی ہیں اور روزگار کے متلاشی افراد اپنے سی وی ان ویب سائٹوں پر اپ لوڈ کرتے ہیں۔ حال ہی میں یہ تشویشناک انکشاف ہوا ہے کہ اس نوعیت کی خدمات فراہم کرنے والی ویب سائٹوں کی آڑ میں متعدد جعلسازوں اور حتیٰ کہ دہشت گردوں نے بھی لوگوں کو نشانہ بنانا شروع کردیا ہے۔

’اگر تم نے اپنی داڑھی شیو نہ کی تو خود کشی کرلوں گی‘ امام مسجد کو بیوی نے زندگی کی سب سے بڑی مشکل میں ڈال دیا تو پھر اس نے کیا کیا؟ آپ بھی جانئے

ویب سائٹ پروپاکستانی کی رپورٹ کے مطابق سوشل میڈیا پر حال ہی میں یہ تشویشناک انکشاف ہوا ہے کہ پاکستانی قانون نافذ کرنے والے اداروں نے کالعدم تنظیموں اور بیرونی ایجنسیوں سے تعلق رکھنے والے ایک گروہ کا سراغ لگایا ہے جو متعدد ویب سائٹوں پر ملازمت کے اشتہار شائع کرکے لوگوں کے سی وی وصول کرتا تھا اور ذاتی معلومات اور تصاویر حاصل کرکے ناصرف معصوم شہریوں کو بلیک میل کررہا تھا بلکہ ان کی پرائیویٹ معلومات کو جعلی دستاویزات بنانے اور شناخت کے فراڈ میں بھی استعمال کررہا تھا۔

رپورٹ کے مطابق انٹرنیٹ پر ایسے متعدد گروہ سرگرم ہوچکے ہیں، جو ملازمت تلاش کرنے والے شہریوں کے لئے بہت بڑا خطرہ بن چکے ہیں۔ عام طور پر ان کا نشانہ بننے والے شہریوں کو اس فراڈ کا پتہ اسی وقت چلتا ہے جب پولیس ان کے گھر تک پہنچ جاتی ہے، کیونکہ ان کی شناختی معلومات کسی مجرم کی جعلی شناخت کے طور پر استعمال ہو چکی ہوتی ہیں۔

جعلسازوں اور دہشت گرد تنظیموں کی اس نئی حکمت عملی پر تحقیق کرنے والے ماہرین کا کہنا ہے کہ اس خطرے سے بچاﺅ کے لئے شہریوں کو بہت محتاط رہنے کی ضرورت ہے۔ کسی بھی ادارے کو اپنا سی وی پوسٹ کرتے ہوئے یہ یقینی بنانا ضروری ہے کہ وہ ادارہ حقیقی وجود رکھتا ہو اور قانون کے مطابق کام کرتا ہو۔ اگر آپ کو کسی کمپنی کے متعلق حقائق معلوم نہیں تو سی وی پوسٹ کرنے سے پہلے اس کے بارے میں معلومات ضرور حاصل کریں۔ حقیقی اور قانونی ادارے عموماً اپنی ویب سائٹیں اور اپنے ڈومین نیم والے ای میل ایڈریس رکھتے ہیں۔ ان کے اکاﺅنٹ عموماً جی میل یاہاٹ میل پر نہیں ہوتے، لہٰذا کسی کمپنی کو سی وی بھیجنے سے پہلے یہ یقین کرلیں کہ اس کی ویب سائٹ موجود ہے اور اس کے اپنے ڈومین نیم کا حامل ای میل ایڈریس بھی موجود ہے۔ کمپنی کی حقیقی موجودگی اور قانونی حیثیت کے بارے میں بھی معلومات حاصل کریں۔

آپ کو ملازمت کی جتنی بھی شدید ضرورت ہو، کبھی بھی اپنا سی وی اور تصاویر کسی مشکوک یا نامعلوم کمپنی کو نہ بھیجیں، کیونکہ یہ قدم آپ کی سلامتی کے لئے خطرہ ثابت ہوسکتا ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...