راجناتھ کی تقریر کو پاکستانی ٹی وی چینلز پر بلیک آؤٹ کر دیا گیا

راجناتھ کی تقریر کو پاکستانی ٹی وی چینلز پر بلیک آؤٹ کر دیا گیا

  



 نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک)اسلام آباد میں منعقد ہونے والی سارک ممالک کے وزرائے داخلہ کی کانفرنس میں بھارت اور پاکستان کے درمیان کشیدگی برقرار ،سارک کانفرنس میں شریک بھارتی وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ سے چوہدری نثار علی خان نے ہاتھ بھی بمشکل ملایا، وزرائے داخلہ کے اعزاز میں دی جانے والی ضیافت میں پاکستانی وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان کی عدم شرکت پر بھارتی وزیر داخلہ کھانا کھائے بغیر ناراض ہو کر اپنے کمرے میں چلے گئے اور ہوٹل کے کمرے میں ہی ہندوستانی وفد کے ہمراہ لنچ کیا۔بھارتی نجی چینل ’’این ڈی ٹی وی ‘‘ کے مطابق پاکستانی دارالحکومت اسلام آباد میں سارک ممالک کے وزرائے داخلہ کی کانفرنس میں پاک بھارت کشیدگی عروج پر نظر آئی ،پاکستانی وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان نے پہلی بار آمنا سامنا ہونے پر نہ صرف اپنے بھارتی ہم منصب سے ہاتھ بھی بمشکل ملایا ،بلکہ سارک کانفرنس کے شرکاء کے اعزاز میں سرکاری سطح پر دی جانے والی ضیافت میں بھی چوہدری نثار علی خان شریک نہیں ہوئے جس پر ناراض ہو کر راج ناتھ سنگھ نے بھی وہاں پر کھانا نہیں کھایا اور اپنے ہوٹل کے کمرے میں چلے گئے ،جہاں انہوں نے اپنے ساتھ کانفرنس میں شریک ہندوستانی وفد کے ہمراہ کمرے میں ہی کھانا منگوا کر کھا یا اور کھانا کھانے کے بعد وہ واپس ہندوستان روانہ ہو گئے۔بھارتی میڈیا کا الزام لگاتے ہوئے کہنا ہے کہ سارک وزرائے داخلہ کانفرنس میں راج ناتھ سنگھ کی تقریر کو پاکستانی ٹی وی چینلز پر بلیک آؤٹ کر دیا گیا تھا۔بھارتی میڈیا نے واویلا مچاتے ہوئے کہا کہ راج ناتھ سنگھ کی پاکستان آمد سے قبل ہی پاکستانی وزیر اعظم نواز شریف نے ’’کشمیر راگ ‘‘ چھیڑ تے ہوئے کہا تھا کہ کشمیر میں آزادی کی نئی لہر پیدا ہو چکی ہے اور بھارتی حکومت کو یہ تسلیم کر لینا چاہئے کہ کشمیر بھارت کا اندرونی معاملہ نہیں ہے،پاکستانی وزیر اعظم کا برہان مظفر وانی کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہنا تھا کہ کشمیری نوجوان خود ارادیت کے حق کے لئے قربانی کے نئے باب لکھ رہے ہیں۔

بھارتی میڈیا

مزید : صفحہ اول


loading...