چیف جسٹس سپریم کورٹ کا اعضا کی غیر قانونی پیوندکاری پر ازخود نوٹس

چیف جسٹس سپریم کورٹ کا اعضا کی غیر قانونی پیوندکاری پر ازخود نوٹس

  



 اسلام آباد ( اے این این )سپریم کورٹ نے اعضا کی غیرقانونی پیوند کاری پر از خود نوٹس کیس کا دائرہ کار بڑھاتے ہوئے وفاقی و صوبائی سیکرٹریز صحت کو نوٹس جاری کر دیا ہے جبکہ چیف جسٹس نے اپنے ریمارکس میں کہا ہے کہ پاکستان گردوں کے معاملے پر بین الاقوامی ڈونر بن چکا ہے ، غلط کاموں میں بھارت کی پیروی نہیں کرنی ۔چیف جسٹس انور ظہیر جمالی کی سربراہی میں دو رکنی بینچ نے پنجاب میں اعضا کی غیرقانونی پیوندکاری سے متعلق ازخود نوٹس کیس کی سماعت کی ۔ سپریم کورٹ نے اعضا کی غیر قانونی پیوند کاری پر از خود نوٹس کیس کا دائرہ کار بڑھاتے ہوئے وفاقی و صوبائی سیکرٹریز صحت کو نوٹس جاری کر دیا ہے ۔چیف جسٹس نے کہا کہ وفاقی اور صوبائی سیکرٹریز بتائیں کہ غیر قانونی پیوند کاری کے معاملے کی کیا حقیقت ہے ۔ وفاقی و صوبائی سیکرٹریز کا جواب آنے کے بعد کارروائی آگے بڑھائیں گے ۔ اعضا کی غیرقانونی پیوند کاری کا معاملہ انتہائی سنگین ہے ۔ ڈاکٹر ادیب رضوی کے خط پر ازخود نوٹس لیا گیا ہے ۔ ڈاکٹر ادیب رضوی کو پورا ملک جانتا ہے ۔انہوں نے کہا کہ قانونی پیوند کاری پر کوئی قدغن نہیں ، دوسرے ممالک سے لوگ یہاں گردے خریدنے آتے ہیں ، پاکستان گردوں کے معاملے پر بین الاقوامی ڈونر بن چکا ہے، غلط کاموں میں بھارت کی پیروی نہیں کرنی، پیوند کاری کے قانون میں کوئی سقم ہے تو اسے دور کیا جائے۔چیف جسٹس انور ظہیر جمالی نے کہا کہ عدالت نے کسی ہسپتال کیخلاف ابھی تک کوئی حکم جاری نہیں کیا، اگر کسی ہسپتال کو انتظامیہ تنگ کرتی ہے تو وہ متعلقہ فورم سے رجوع کرے ، مقدمے کی سماعت اگست کے آخری ہفتے تک ملتوی کر دی گئی ۔

چیف جسٹس

مزید : صفحہ اول


loading...