شریف برادران قصاص کا قانون بلڈوز کررہے ہیں:طاہرالقادری

شریف برادران قصاص کا قانون بلڈوز کررہے ہیں:طاہرالقادری

  



لاہور(خبر نگار خصوصی ) پاکستان عوامی تحریک کے قائد ڈاکٹر طاہر القادری نے ہنگامی پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ شریف برادران سانحہ ماڈل ٹاؤن کے انصاف اور قصاص سے بچنے کیلئے سو سال پرانے قانون،ضابطہ فوجداری ایکٹ 1898 کے سیکشن 200سے 204 تک کو بلڈوز کرنے جا رہے ہیں ۔انصاف اور عوام کے بنیادی حقوق کے خلاف اعلان جنگ کا حکم وزیر اعظم میاں نواز شریف نے دیا اور عملدرآمد وزیر اعلیٰ پنجاب کروا رہے ہیں ۔قانون کے ساتھ حکومتی دہشتگردی کا منصوبہ 180-Hبلاک میں تیار ہوااور عملدرآمد کیلئے اسے اسلام آباد بھجوا یا جا چکا ہے ۔ میاں نواز شریف طیب اردگان بننے کی خواہش دل سے نکال دیں انکی یہ خواہش کبھی پوری نہیں ہو گی ۔سربراہ عوامی تحریک نے سیکرٹری جنرل خرم نواز گنڈا پور،میاں فیض ایڈووکیٹ،اشتیاق چوہدری ایڈووکیٹ ،نعیم الدین چوہدری ایڈووکیٹ ،جی ایم ملک، مرکزی سیکرٹری اطلاعات نور اللہ صدیقی،ساجد بھٹی،جواد حامد کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ایک ایسے موقع پر ضابطہ فوجداری میں ترامیم لائی جا رہی ہیں جب عوامی تحریک کا استغاثہ انسداد دہشتگردی کی عدالت میں زیر سماعت ہے ،جس قانون کے تحت یہ استغاثہ دائر ہوا حکمران اس قانون کو ختم کرنے جا رہے ہیں ،ان ترامیم کے بعد ایف آئی آر کے اندراج سے انکار کی صورت میں کوئی متاثرہ فریق عدالت سے براہ راست رجوع نہیں کر سکے گا۔پرائیویٹ کمپلینٹ کی صورت میں اسے پھر دوبارہ ایس ایچ او کی توثیق سے ہی عدالت سے رجوع کرنے کا حق ملے گا اور حکومت ریٹائرڈ افراد کے ذریعے پرائیویٹ کمپلینٹ کو ایگزامن کروائے گی ،انہوں نے کہاکہ فی الوقت یہ کھیل سانحہ ماڈل ٹاؤن کے قصاص سے بچنے کیلئے ہے تا ہم ان ترامیم سے 20کروڑ عوام کا فوری انصاف کے حصول کا بنیادی حق متاثر ہو گا ۔قانون کے ساتھ اس حکومتی دہشتگردی اور منصوبہ بندی کے بارے میں عوام، وکلاء کی تنظیموں، اراکین پارلیمنٹ ،سیاسی جماعتوں اور سول سوسائٹی کی تنظیموں کو پیشگی آگاہ کر رہے ہیں۔

مزید : صفحہ آخر


loading...