پاکستان، چین، افغانستان، تاجکستان کے فوجی اتحاد سے مقصد کے حصول میں آسانی ہو گی: عسکری ماہرین

پاکستان، چین، افغانستان، تاجکستان کے فوجی اتحاد سے مقصد کے حصول میں آسانی ہو ...

  



لاہور(محمد نواز سنگرا)ملک کے عسکری ماہرین نے پاکستان،چین،افغانستان اور تاجکستان کی افواج کے دہشتگردی کے خلا ف پورے خطے کیلئے خوش آئند قرار دیا ہے۔روز نامہ پاکستان سے گفتگو کرتے ہوئے عسکری ماہرین نے کہا کہ چاروں ممالک کی افواج کا اتحاد نہایت اہمیت کا حامل ہے تین مسلمان ممالک کے اتحاد میں چین کی شمولیت سے مقصد کے حصو ل میں آسانی ہو گی۔اس حوالے سے جنرل (ر)جمشید ایا ز نے کہا کہ حکومتی سطح پر اتحاد ہوتے رہتے ہیں افواج کا بھی مل کر دہشت گردی کے خلاف آگے بڑھنا خطے کیلئے نہایت اہم ہے۔بلاشبہ پاکستان اور چین کی افواج دنیا کی بہتری افواج میں شما ر ہوتی ہے اور دہشت گردوں کاہر صورت صفایا ہو گا۔جنرل(ر)راحت لطیف نے کہا کہ چاروں ممالک کے نام سامنے آچکے ہیں تین مسلم ممالک کے ساتھ چین کا اتحاد نیک شگون ثابت ہو گا۔چاروں ممالک کی افواج مل کر دہشتگردی کے خلاف لائحہ عمل طے کریں گے جس سے خطے میں امن ناگزیر ہو گا۔چاروں ممالک کی افواج مضبوط ہیں اور ایک دوسرے کی مدد سے دہشتگری کا صفایا ہو گا۔بریگیڈئیر (ر)اسلم گھمن نے کہا کہ دہشتگردی پوری دنیا کامسئلہ ہے جس کیلئے پوری دنیا کی افواج کو مل کر آگے بڑھنا چاہیے اور اس ناسور کا خاتمہ ہونا چاہیے۔ساؤتھ ایشیا کے ممالک کی افواج کے اتحاد سے دہشتگردی کا صفایا کرنے میں مدد ملے گی۔ائیر مارشل (ر)شاہد ذوالفقار نے کہا کہ پاکستان،افغانستان،چین اور تاجکستان کی افواج کا اتحاد درست فیصلہ ہے سول حکومتوں کو بھی اپنا کردار ادا کرنا چاہیے۔حکومت کو بھی اپنی ذمہ داریاں پوری کرنی چاہیں۔افواج پاکستان نے بہت قربانیاں دی ہیں لیکن حکمرانوں کی کارکردگی قابل تشویش ہے۔خطے میں قیام امن کیلئے حکومتوں کو افواج کی بھرپور حمایت کرنی چاہیے۔چاروں ممالک کی افواج کے اتحاد سے بھارت کو تکلیف ضرور ہوئی ہو گی لیکن مضبوط اتحاد ہی امن کا ضامن ہو سکتا ہے۔

عسکری ماہرین

مزید : صفحہ آخر


loading...