اے ڈی جی ایم ڈی اے ایمپلائز یونین عہدیداروں میں کشیدگی عروج پر پہنچ گئی

اے ڈی جی ایم ڈی اے ایمپلائز یونین عہدیداروں میں کشیدگی عروج پر پہنچ گئی

  



ملتان(نمائندہ خصوصی)ایڈیشنل ڈائریکٹر جنرل ایم ڈی اے محمد الطاف حسین ساریو اور ایمپلائز یونین(سی بی اے)ایم ڈی اے کے درمیان معاملات پوائنٹ آف نو ریٹرن پر پہنچ (بقیہ نمبر31صفحہ12پر )

گئے ہیں ایک طرف اے ڈی جی کی ریفرنس پر نیب اور اینٹی کرپشن اسٹبلشمنٹ ملتان ہیڈ کوارٹر نے ایمپلائز یونین کے عہدے داران اور ڈائریکٹر ٹاؤن پلاننگ کے خلاف انکوائری شروع کررکھی ہے تو دوسری طرف نیب ملتان بیورو نے ممنوعہ زون میں منظوری ہونے والی ہاؤسنگ سکیموں کی شکایات کا جائز لینا شروع کردی ہے معلوم ہوا ہے ایڈیشنل ڈائریکٹر جنرل ایم ڈی اے الطاف حسین ساریو ایمپلائز یونین(سی بی اے)ایم ڈی اے کی جانب احتجاج کے بعد اپنے اعلی افسران کو باقاعدہ اعتماد میں لیا اور انہیں یونین عہدے داروں کے حوالے سے درپیش تحفظات کا اظہار کیا جس پر انکے اعلی افسران نے انہیں حرکت میں آنے کا حکم دیا جس پر اے ڈی جی کیطرف سے ایمپلائز یونین کے خلاف نیب کو ریفرنس بھجوایا گیا اس سلسلے میں نیب کے انکوائری افسر نے گزشتہ روز یونین آفس آئے اور یونین عہدے داران سے ملاقات کی اس دوران انہوں نے مطلوبہ کاغذات حاصل کئے اور واپس چلے گئے دوسری جانب یونین عہدے داروں کی درخواست پر اینٹی کرپشن اسٹبلشمنٹ ملتان ہیڈ کوارٹر نے اے ڈی جی اور ٹاؤن پلاننگ کے افسران کے خلاف انکوائری شروع کردی ہے اس انکوائری کے سلسلے میں بدھ کے روز اے ڈی جی کو انکوائری آفیسر محمد ارشد گوپانگ کو پیش ہوئے بعد ازاں اگلی سماعت کی تاریخ دیکر روانہ کردیا گیا دوسری جانب نیب ملتان نے اے ڈی جی الطاف حسین ساریوں اور ٹاؤن پلاننگ کے افسران کے خلاف ایک شکایت کا جائزہ لیا شروع کردای ہے درخواست گزارنے اپنی درخواست میں الزام عائد کیا ہے کہ اے ڈی جی الطاف حسین ساریو اور ٹاؤن پلاننگ کے افسران نے متی تل روڈ پر واقع ممنوعہ زون میں ایک گروپ کو ہاؤسنگ سکیم بنانے کی اجازت دی اور اختیارات کا ناجائز استعمال کیا معلوم ہوا ہے نیب حکام نے اس ہاؤسنگ سکیم کے حوالے سے ریکارڈ اکٹھا کرنا شروع کردیا ہے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...