عباسیہ کینال خانپور میں ڈوبنے والے نوجوان کے والد پر قتل کرنیکا الزام

عباسیہ کینال خانپور میں ڈوبنے والے نوجوان کے والد پر قتل کرنیکا الزام

  



مٹھن کوٹ(نامہ نگار) مٹھن کوٹ کا رہائشی 15 سالہ نوجوان شاکر حسین گذشتہ روز عباسیہ کینال خانپور میں نہاتے ہوئے جان بحق ہوگیا تھا جس کی نعش کو اس کا والد غازی خان اپنے گھر موضع مرغائی لے آیا سے اس دوران لڑکے کے چچا اور دیگر ورثا نے متوفی کی تدفین رکوادی اور نعش کے پوسٹ (بقیہ نمبر19صفحہ12پر )

مارٹم کا مطالبہ کرتے ہوئے غازی خان پر لڑکے کے مبینہ قتل کا الزام عائد کردیا غازی خان کی طرف سے نعش ورثا کے حوالے نہ کرنے پر وہ مشتعل ہو گئے مل کے نزدیک احتجاج کرتے ہوئے انڈس ہائی وے پر رکاوٹیں کھڑی کرکے اس کو بند کردیا جس کی وجہ سے ٹریفک کئی گھنٹے تک وہاں پر رکی رہی ڈی ایس پی ہیڈ کوارٹر راجن پور اعجاز رندھاوہ ایس ایچ او مٹھن کوٹ عباس خان گورمانیاور ایس ایچ او صدر راجن پور نذیر جاوید نے موقع پر پہنچ کر مظاہرین سے مذاکرات کئے فریقین کے درمیان طے پایا کہ نعش پوسٹ مارٹم کے لئے پولیس کی تحویل میں رہے گیاور اس کا فیصلہ مجسٹریٹ کرے گا کہ متوفی نوجوان کا حقیقی وارث کون ہے ۔جس پر مظاہرین نے احتجاج ختم کردیا ۔

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...