تحصیل مونسپل ایڈمنسٹریشن کا زخمی ملازمین کیلئے پیکج کا مطالبہ

تحصیل مونسپل ایڈمنسٹریشن کا زخمی ملازمین کیلئے پیکج کا مطالبہ

  



چارسدہ (بیورو رپورٹ)تحصیل میونسپل ایڈ منسٹریشن کے ملازمین نے سیشن کورٹ دھماکوں میں ملوث عناصر کی فوری گرفتاری اور زحمی ملازمین کو حصوصی پیکج دینے کا مطالبہ کیا ۔ پولیس اور بی ڈی ایس کے غفلت اور لاپر واہی کی وجہ سے دوسرا دھماکہ ہو جس میں ٹی ایم اے ملازمین زحمی ہو گئے ۔متاثرہ ٹی ایم اے ملازمین کی داد رسی نہ کی گئی تو 14اگست کے تقریبات سے بائیکاٹ کرینگے ۔ صدر انعام اللہ ۔تفصیلات کے مطابق ٹی ایم اے ملازمین کا ہنگامی اجلاس زیر صدارت صدر میونسپل ورکر یونین انعام اللہ منعقد ہوا۔ اجلاس میں نائب صدر جاوید ، جنرل سیکرٹری امیر زیب ، کابینہ کے دیگر اراکین کے علاوہ سنیٹری سٹاف اور دفتر ی ملازمین نے کثیر تعداد میں شرکت کی ۔ اجلاس میں بدھ سیشن کورٹ کے قریب بم دھماکوں کی شدید مذمت کی گئی اور حکام بالا سے مطالبہ کیا گیا کہ واقعہ کے ذمہ داران کو فوری طور پر گرفتار کرکے قرار واقعی سزا د ی جائے ۔اجلاس میں متفقہ طور قرار داد کے ذریعے صوبائی اور ضلعی حکومت سے مطالبہ کیا گیا کہ بم دھماکہ میں ٹی ایم اے چارسدہ کے متاثرہ ملازمین کے بہتر علاج معالجے کے ساتھ ساتھ حصوصی پیکج فراہم کیا جائے ۔اجلاس سے خطاب کر تے ہوئے صدر انعام اللہ اور دیگر نے اس امر پر افسوس کا اظہار کیا کہ 24گھنٹے گزرنے کے باوجود کسی سیاسی شخصیت اور حکومتی ذمہ داروں نے زحمیوں کی عیادت کی اور نہ کسی قسم کی حوصلہ افزائی کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ٹی ایم اے کے زحمی ملازمین کو بے یار و مدد گار چھوڑا گیا ہے ۔ مقررین نے اس بات پر گہرے غم و عصہ کا اظہا کیا کہ پولیس اور بی ڈی ایس کی غفلت کی وجہ سے دوسرا دھماکہ ہوا جس میں ٹی ایم اے ملازمین زحمی ہو گئے ۔ انہوں نے کہاکہ پولیس اور بی ڈی ایس نے جائے وقوعہ کلےئر کئے بغیر ٹی ایم اے ملازمین کو جائے وقوعہ کے اردگر صفائی پر لگایا جس سے ان کی غفلت اور لا پر واہی واضح ہو چکی ہے ۔اس موقع پر میونسپل ورکرز یونین نے 2 روزہ سوگ کا اعلان کیا اور دھمکی دی کہ اگر متاثرہ ٹی ایم اے ملازمین کی داد رسی نہ کی گئی تو ٹی ایم اے ملازمین 14اگست کے تقریبات کابائیکاٹ کرے گی ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر