سوئی گیس فراہمی پالیسی پر وفاق کی نکتہ چینی سمجھ سے بالا تر ہے :عاقب اللہ

سوئی گیس فراہمی پالیسی پر وفاق کی نکتہ چینی سمجھ سے بالا تر ہے :عاقب اللہ

  



صوابی(بیورورپورٹ) صوابی سے پی ٹی آئی کے منتخب رکن قومی اسمبلی عاقب اللہ خان نے سوئی گیس فراہمی سے متعلق وفاق کی معتصبانہ اور امتیازی پالیسی پر کڑی نکتہ چینی کی ہے اپنے ایک بیان میں عاقب اللہ خان نے کہا کہ پشاور ہائی کورٹ میں ان کی ایک رٹ پٹیشن کے نتیجے میں عدالت نے ان کے حق میں فیصلہ دیتے ہوئے وفاق کو قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 13 صوابی میں ایک ماہ کے اندر اندر سوئی گیس کی فراہمی کا حکم دیا تھا مگر بعض مایوس عناصر کی ایماء پر وفاقی حکومت پشاور ہائی کورٹ کے اس فیصلے پر عمل درآمد کرنے کی بجائے تاخیری حربے اور مختلف حیلے بہانے استعمال کرکے توہین عدالت کی مرتکب ہورہی ہے اور یہ جواز پیش کیا جارہا ہے کہ سوئی گیس کی فراہمی پر پابندی ہے جبکہ حقیقت یہ ہے کہ اسی دوران وزیراعظم نوازشریف نے ڈیرہ اسماعیل خان اور بنوں کو سوئی گیس کی فراہمی کا خود ہی اعلان کرچکے ہیں ۔عاقب اللہ خان نے کہا کہ وزیراعظم خود ان احکامات کی دھجیاں بکھیر چکے ہیں جبکہ دوسری جانب وفاقی حکومت خود ہی پشاور ہائی کورٹ کے فیصلے کی حکم عدولی کرکے توہین عدالت کا ارتکاب کررہی ہے انہوں نے کہاکہ وفاق کی یہ دوغلی پالیسی خود اس کے لئے زہر قاتل بن کرابھر یگی اور وفاق کی اس امتیازی پالیسی کے باعث عوام میں بے چینی اور اضطراب پھیل رہا ہے جو کسی بڑے طوفان کا پیش خیمہ ثابت ہوسکتاہے ۔عاقب اللہ نے کہا کہ اگر این اے 13 صوابی کو سوئی گیس فراہم نہ کی گئی تو وہ عوام سے رجوع کرکے ان کو اعتماد میں لے کر عوام کی مشاورت سے مستقبل کا لائحہ عمل اختیار کیا جائے گا جس کی تمامتر ذمہ داری وفاقی حکومت پر ہوگی۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...