کوہاٹ میں واپڈا ہائیڈرو ورکرز کی احتجاجی ریلی

کوہاٹ میں واپڈا ہائیڈرو ورکرز کی احتجاجی ریلی

  



کوھاٹ (بیورو رپورٹ) ملک بھر کی طرح کوھاٹ میں بھی واپڈا ہائیڈرو ورکرز لیبر یونین نے سیفٹی ڈے کے موقع پر احتجاجی ریلی نکالی جس میں کوھاٹ بھر کے واپڈا سٹاف نے بھرپور شرکت کی ریلی سے ہائیڈرو ورکرز یونین کے عہدیداران نے خطاب کیا اس موقع پر سٹاف نے سیاہ جھنڈے اٹھا رکھے تھے اور پیسکو انتظامیہ سے سیفٹی کے بارے میں اپنے مطالبے کے حق میں نعرے لگا رہے تھے احتجاجی جلسہ سے ڈویژنل چیئرمین یونس شاہ نے خطاب ے دوران کہا کہ پاکستان میں واپڈا کے قیام سے لے کر آج تک واپڈا کے مزدوروں کی کام کے دروان حفاظت کے لیے سفیٹی کا کوئی باقاعدہ قانون پاس نہیں ہوا اور واپڈا اہلکاروں کی شہادت یا زخمی ہونے پر کوئی پرسان حال نہیں ہوتا یونس شاہ نے کہا کہ رواں سال رمضان المبارک کے مہینے میں 16 واپڈا اہلکار کام کے دوران حادثہ کا شکار ہو کر شہید ہوئے جبکہ 32 کارکن شید زخمی ہوئے لائن پر کام کے دوران حادثات رونما ہونے کی سب سے بڑی وجہ سٹاف کی کمی ہے کوھاٹ میں واپڈا سب ڈویژن کے قیام کے وقت کنزومر کی تعداد 40 ہزار تھی اور آج صارفین کی تعداد ایک لاکھ بیس ہزار سے تجاوز کر گئی ہے اس کے باوجود منظور شدہ سٹاف 750 میں سے 319 کا سٹاف کام کر رہا ہے سٹاف کی کمی اور زیادہ کام کے دباؤ کی وجہ سے اہلکار حادثات کا شکار ہوتے ہیں اس کے علاوہ ترقی کے اس جدید دور میں کوھاٹ کا سٹاف قدیم دور کے اوزار سے لائن پر کام کر رہا ہے پیسکو انتظامیہ سے ہمارا شدید مطالبہ ہے کہ پاکٹ کرین‘ لفٹر اور تمام تر جدید اوزار پیسکو سٹاف کو مہیا کیا جائے تاکہ وقت کا ضیاع اور قیمتی جانوں کی زندگی کو محفوظ کیا جا سکے اس کے علاوہ ایک قرار داد کے ذریعے حکومت اور پیسکو انتظامیہ سے یہ مطالبہ بھی کیا گیا کہ کوھاٹ پیسکو کو جلد از جلد سرکل کا درجہ دیا جائے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...