شنواری قوم کے طالب علم کو کالج جانے کی اجازت نہیں

شنواری قوم کے طالب علم کو کالج جانے کی اجازت نہیں

  



خیبر ایجنسی (بیورورپورٹ)طورخم بارڈر سے تقریباً ایک کلو میٹرکے فاصلے پر شہید موڑچیک پوسٹ پر تعینات سیکیورٹی فورسز کے اہلکار وں نے شینواری قوم باچا مینہ طورخم کے طالب علموں کو لنڈی کوتل میں سکول اور کالج میں جانے کی اجازت نہیں دی، طلباء کے پاس والدین کے شناختی کارڈز کی فوٹو کاپیاں اور کالج کارڈز ہونے کے باوجود سکول جانے کی اجازت نہیں دی گئی ،طورخم تحصیلدار غنچہ گل نے مداخلت کرکے طلباء کو سکول جانے کی اجازت دی ،ذرائع طورخم باچا مینہ میں رہائش پذیر قوم شینواری قبیلہ خوگا خیل کے میٹرک پاس طلباء فرسٹ ائیر میں داخلے لینے اور دوسرے طلباء لنڈی کوتل کے سرکاری اور پرائیویٹ سکولوں کو جاتے ہیں ۔شہید موڑچیک پوسٹ پرایف سی کے اہلکاروں نے طلباء سے شناختی کارڈ مانگے لیکن طلباء کی عمریں 18سال سے کم ہیں اور زیادہ تر طلباء کے پاس شناختی کارڈ زنہیں ہو تے جبکہ تما م طلباء اپنے والدین کے شناختی کارڈز کی فوٹو کاپیاں یا سکول اور کالج کارڈز اپنے پاس رکھتے ہیں اور تمام طلباء سکول اور کالج یونیفارم میں ہو تے ہیں جس پر کالج اور سکول کے نام اور پاکستان کے جھنڈے بھی لگے ہو تے ہیں لیکن ذرائع کے مطابق اس کے باؤجود ایف سی کے اہلکاروں نے جانے کی اجازت نہیں دی جو بعد ازاں ذرائع کے مطابق طورخم کے نائب تحصیلدار غنچہ گل نے مداخلت کر کے طلباء کو سکول اور کالج جانے کی اجازت دی ا س سلسلے میں باچہ مینہ خوگاخیل شینواری قوم کے رہائشی ر حیم گل شنواری نے بتایاکہ طورخم بارڈر سے ایک کلو میٹرکے فاصلے پرشہید موڑ چیک پوسٹ پر ایف سی کے اہلکاروں نے ان کو بھی روکا اور شناختی کارڈ چیک کیا لیکن میرے بیٹے کے پاس شناختی کارڈ نہیں تھا لیکن انہوں نے سکول میٹرک سر ٹیفیکٹ اورڈومیسائل دکھایا جس میں ولدیت نام یعنی میرا نام درج تھا لیکن اس کے باوجود ایف سی اہلکاروں نے میرے بیٹے کو جو کالج میں داخلہ لینے جارہا تھا کو اجازت نہیں دی خوگا خیل شنواری قوم باچہ مینہ عوام نے آئی جی ایف سی ،اے سی ایس فاٹا ،کمانڈنٹ خیبر رائفلز اور پولیٹیکل ایجنٹ خیبر ایجنسی سے مطالبہ کیا ہے کہ شہید موڑپر تعینات ایف سی کے اہلکا روں کا قبلہ درست کیا جائے اور لنڈی کوتل کے عوام کے ساتھ رویہ ٹھیک کریں واضح رہے کہ میڈیا کے نمائندے جب میڈیا

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...