ملاکنڈ ٹیکس ایکٹ خاتمہ ،سیاسی بمبر سکورنگ کرنیوالے عوام کیلئے ریلیف پیکج منظور کرائیں :مولانا سلمان تاثیر

ملاکنڈ ٹیکس ایکٹ خاتمہ ،سیاسی بمبر سکورنگ کرنیوالے عوام کیلئے ریلیف پیکج ...

  



سخاکوٹ( نمائندہ پاکستان) جمعیت علماء اسلام ملاکنڈ کے ڈپٹی جنرل سیکرٹری مولانا سلمان تاثیر نے کہا ہے کہ ملاکنڈ ڈویژن میں ٹیکس خاتمے کی کریڈٹ لینے کی کوشش کرنے والوں نے ملاکنڈ ڈویژن میں ٹیکس لگانے کی کوشش کی تھی لیکن عوام کے کامیاب ہڑتال اور مولانا فضل الرحمان کے کوششوں نے سازش ناکام بنا دی ہے ۔ سیاسی سکورنگ کرنے والے حکومت سے ڈویژن بھر کے عوام کے لئے ریلیف پیکج منظور کرائیں کیونکہ احتجاج کے دوران ڈویژن بھر کے 15لاکھ سے زائد دکا نیں بند تھیں۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے پریس کلب آفس میں میڈیاسے بات چیت کرتے ہوئے کیا ۔ انہوں نے کہا کہ ڈویژن بھر کے ایم این ایز اور ایم پی ایز کو ٹیکس نفاذ کے فیصلے کے وقت احتجاج کرنا چاہئے تھاکیونکہ ٹیکس لگانے کا فیصلہ ان کے موجودگی میں ہوا تھا اس لئے منتخب ممبران آئندہ عوام کے مفاد میں فیصلے کرتے ہوئے اس قسم کے کاموں سے اجتناب کریں بصورت دیگر جمعیت علما ء اسلام ملاکنڈ کے عوام کیساتھ ہو گی اور پھر منتخب ممبران کے گھروں کے سامنے احتجاج کرینگے ۔ مولانا سلمان تاثیر نے کہا کہ جے یو آئی ملاکنڈ کے ایک نمائندہ وفد نے ضلعی آمیر مفتی کفایت اﷲ اور سابق سینیٹر صاحبزادہ خالد جان کی قیادت میں مرکزی آمیر مولانا فضل الرحمان سے ملاقات کی تھی جس کے دوران ٹیکس کاایشو اُٹھایا گیا تھا اور مولانا فضل الرحمان نے وزیر اعظم نواز شریف سے بات کرنے اور ٹیکس نہ لگانے کا وعدہ کیا تھا جس کو انہوں نے پورا کرکے دکھایا ہے ۔ ڈپٹی جنرل سیکرٹری نے مرکزی اور صوبائی حکومت سے آپیل کہ ٹیکس لگانے کی بجائے ملاکنڈ ڈویژن کے عوا م کو ریلیف پیکج دیا جائے کیونکہ سیلاب ، آپریشن اور زلزلہ سے عوام مالی طور پر متاثر ہوئے ہیں ۔ انہوں نے کامیاب ہڑتال پر تاجربرادری ،سیاسی جاعتوں کے کارکنوں اور صحافیوں کو خراج تحسین پیش کیا اور انہیں مبارکباد دی ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...