قانون عام آدمی کو مجرم پکڑنے کی اجازت دیتا ہے:اے ڈی خواجہ

قانون عام آدمی کو مجرم پکڑنے کی اجازت دیتا ہے:اے ڈی خواجہ
قانون عام آدمی کو مجرم پکڑنے کی اجازت دیتا ہے:اے ڈی خواجہ

  



کراچی(مانیٹرنگ ڈیسک)آئی جی سندھ اللہ ڈینو خواجہ کا کہنا ہے کہ پولیس میں بہتری کے لیے تجاویز موجود ہیں ،ضرور اس پر بات ہو گی،پولیس آرڈر 2002کاقانون بہت بہترتھا۔

جیو نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا پولیس آرڈر 2002 سے متعلق فیصلہ پارلیمنٹ نے کیا ،پولیس آرڈ 2002کاقانون بہت بہترتھا۔انہوںنے کہا پولیس کو سیاسی اثرورسوخ سے سے پاک ہونا چاہیے ،نئے وزیراعلیٰ کے آنے کے بعد صوبے کے حالات میں بہتری آئے گی۔وزیراعلیٰ سندھ کے والد کا سٹاف افسررہ چکا ہوں،مراد علی شاہ بہت کچھ کرنا چاہتے ہیں۔

آئی جی سندھ اے ڈی خواجہ نے کہا پاکستان کو ہتھیاروں سے پاک کرنےکی پالیسی ملک بھرمیں یکساں ہونی چاہیے۔قانون بالکل واضح ہے کہ کس صورت میں ہتھیاراستعمال کیا جاسکتا ہے۔

اے ڈی خواجہ نے کہا میں نے کوئی غیرقانونی بات نہیں کی،اب بھی اس بات پر قائم ہوںکہ اسلحہ دفاع کیلئے ہی ہوتاہے،قانون میں اجازت ہے کہ عام آدمی مجرم کو گرفتارکرسکتا ہے،قانونی مسائل سے بچنے کے لیے لوگ یہ اختیاراستعمال نہیں کرتے۔عوام کی آنکھیں پولیس کے لیے سب سے اہم ہیں۔

مزید : کراچی /اہم خبریں