پاکستانی ہیلی کاپٹر کی کریش لینڈنگ کے متعلق کچھ پتہ نہیں :طالبان ترجمان

پاکستانی ہیلی کاپٹر کی کریش لینڈنگ کے متعلق کچھ پتہ نہیں :طالبان ترجمان
پاکستانی ہیلی کاپٹر کی کریش لینڈنگ کے متعلق کچھ پتہ نہیں :طالبان ترجمان

  



اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک)افغان طالبان کے ترجمان نے کہا ہے کہ پاکستانی ہیلی کاپٹر کی کریش لینڈنگ سے متعلق کچھ پتہ نہیں ہے۔

افغان میڈٖیا سے گفتگو کرتے ہوئے ترجمان طالبان نے کہا کہ واقعے کے حقائق کا جائزہ لیا جا رہا ہے۔

دوسری جانب دفتر خارجہ کا کہنا ہے کہ پنجا ب حکومت کے ہیلی کاپٹر سے متعلق کوئی علم نہیں ہے ، ہیلی کاپٹر کی لوکیشن اور مسافروں کے حالات کا کوئی علم نہیں ۔ ترجمان دفتر خارجہ کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ ہیلی کاپٹر مرمت کیلئے روس جا رہا تھا ، ہیلی کاپٹر صبح 8.45منٹ پر روانہ ہوا اور دس بجے کے بعد افغانستان میں لاپتہ ہو گیا ۔’’وزارت خارجہ کو افغان حکومت کے جواب کا انتظار ہے ‘‘مگر ابھی تک افغان حکومت کی جانب سے کوئی معلومات فراہم نہیں کی گئیں۔وزارت خارجہ کے رابطہ کرنے کے باوجود معلومات فراہم نہیں کی گئی ہیں ۔

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کیلئے یہاں کلک کریں

ترجمان کا مزید کہنا تھا کہ افغانستان سے ہیلی کاپٹر کی فلائٹ کلیئرنس بھی لی گئی تھی اور افغان حکومت سے ہیلی کاپٹر کی تلاش کیلئے درخواست کی ہے ۔ ہیلی کاپٹر نے افغانستان اور وسط ایشائی ریاستوں سے گزرنا تھا ۔

دوسری جانب افغان طالبان کے ترجمان کا کہنا ہے کہ پاکستانی ہیلی کاپٹر کی کریش لینڈنگ سے متعلق کچھ پتہ نہیں ہےتاہم حقائق کا جائزہ لیا جا رہا ہے۔

روزنامہ پاکستان کی خبریں اپنے ای میل آئی ڈی پر حاصل کرنے اور سبسکرپشن کیلئے یہاں کلک کریں

یاد رہے کہ گزشتہ روز پنجاب حکومت کے ایم آئی 17ہیلی کاپٹر اوورہالنگ کیلئے ازبکستان جاتے ہوئے افغانستان کے صوبے لوگر میں ہنگامی لینڈنگ کے بعد لاپتہ ہو گیا تھا ۔ ہیلی کاپٹر میں پانچ پاکستانی اور ایک روسی شہری سوار تھے ۔واقعے کے بعد یہ خبریں بھی آرہی تھیں کہ ہیلی کاپٹر کو طالبان نے آگ لگا دی ہے اور مسافروں کو یرغمال بنا لیا ہے۔

مزید : قومی


loading...