سامعہ قتل کیس‘ والد اور پہلے شوہر کو ملزم قرار دیدیا گیا

سامعہ قتل کیس‘ والد اور پہلے شوہر کو ملزم قرار دیدیا گیا
سامعہ قتل کیس‘ والد اور پہلے شوہر کو ملزم قرار دیدیا گیا

  



جہلم (آئی این پی) سامعہ شاہد قتل کیس میں والد اور پہلے شوہر کو مرکزی ملزم قرار دیدیا گیا۔ تحقیقاتی ٹیم دونوں ملزموں سے پھر تفیتش کرے گی۔ ادھر قتل کیس میں نامزد ملزم چودھری شکیل نے دوران تفتیش پولیس کو بتایا کہ سامعہ 5 روز اس کے پاس رہی اور اس نے سامعہ کا طبی معائنہ بھی کرایا تھا۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق جہلم پولیس پہلے روز سے سامعہ کے قتل کو طبعی موت قرار دے رہی ہے جب کہ سامعہ کے والد، کزن اور سابق شوہر کے سامعہ کی موت کے بارے میں تمام بیانات جھوٹ ثابت ہوئے کیوں کہ فرانزک رپورٹ میں انکشاف ہوا ہے کہ خاتون کو گلا دبا کر قتل کیا گیا۔ دوسری جانب ملزم چودھری شکیل نے پولیس کو بیان ریکارڈ کراتے ہوئے کہا ہے کہ سامعہ 5 دن میرے ساتھ رہی جسے ڈاکٹر کے پاس بھی لے کر گیا اور طبی معائنہ بھی کرایا تاہم سامعہ کی موت کے حوالے سے انہیں کچھ معلوم نہیں۔

واضح رہے کہ پاکستانی نڑاد برطانوی خاتون سامعہ کی 20 جولائی کو موت واقعہ ہوئی تھی اور اس کے دوسرے شوہر مختار کاظم نے 23 جولائی کو اپنی اہلیہ کی موت کا مقدمہ درج کرایا تھا۔

مزید : جہلم