لاہور میں کا نگووائرس نے خطرے کی گھنٹی بجا دی 2مشتبہ مریض سر وسز ہسپتال داخل

لاہور میں کا نگووائرس نے خطرے کی گھنٹی بجا دی 2مشتبہ مریض سر وسز ہسپتال داخل
لاہور میں کا نگووائرس نے خطرے کی گھنٹی بجا دی 2مشتبہ مریض سر وسز ہسپتال داخل

  



لاہور (ویب ڈیسک ) خطرے کی گھنٹی بج اٹھی،لاہور میں کانگووائرس کے دو مشتبہ مریض سامنے آگئے۔دونوں کے نمونے ٹیسٹ کیلئے نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف ہلیتھ کو بھجوادئیے گئے۔کانگووائرس کے کیسز دیگر شہروں میں سامنے آنے کے بعد لاہور میں بھی کانگووائرکے دو مشتبہ مریض سامنے آگئے ہیں۔ سٹی 42 کی رپورٹ کے مطابق سروسز ہسپتال میں مو ضع پھلروان عزیز بھٹی ٹاﺅن کے رہائشی 35سالہ عمران اور اچھرہ کے رہائشی بیس سالہ احمد امتیاز کو داخل کیا گیا ہے۔ڈاکٹر کی جانب سے دونوں مریضوں کے کا نگووائرس میں مبتلا ہونے کا شبہ ظاہر کئے جانے پر تصدیق کیلئے ان کے نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف ہیلتھ سے ٹیسٹ کر وائے جارہے ہیں ۔کانگووائرس کی دہشت ،محکمہ وائلڈ لائف نے سیا حوں پر پارکس میں برڈایوری میں داخلے پر پابندی لگا دی ۔کانگووائرس ایک خطرناک بیماری ہے جو عمو مابھیڑ،بکریوں اور کتوں میں پاجاتی ہے۔اس بیماری میں چیچڑنامی کیڑا جانور کی کھال سے خون چوستا ہے کانگو وائرس کے پھیلنے کے خدشے کے مدنظروائلڈ لائف انتظامیہ نے بھی کمر کس لی ہے اور حفاظتی تدابیر شروع کر دی ہیں ۔یونیورسٹی آف وٹر نری اینڈ اینمل سائنسز کی پروفیسر ڈاکٹر انیلہ درانی نے کہا ہے جہاںبھی جانور موجود ہیں وہاں اس وائرس کے پھیلنے کا خدشہ ہے۔ماہرین نے کہا ہے عیدالاضحی پر دوسروں شہروں سے لائے جانے والے جانور کانگووائرس کے پھیلانے کی بڑی وجہ بن سکتے ہیں جس سے بچاﺅ کے لئے قبل ازوقت احتیاط کی ضرورت ہے۔

مزید : لاہور