پاکستان کھانا کھانے نہیں گیا تھا ،چوہدری نثار کے رویے پر احتجاج درج نہیں کرایا،لیکن جو ہوا ,ا چھا نہیں تھا :بھارتی وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ

پاکستان کھانا کھانے نہیں گیا تھا ،چوہدری نثار کے رویے پر احتجاج درج نہیں ...
پاکستان کھانا کھانے نہیں گیا تھا ،چوہدری نثار کے رویے پر احتجاج درج نہیں کرایا،لیکن جو ہوا ,ا چھا نہیں تھا :بھارتی وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ

  



نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک)بھارتی وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ نے کہا ہے کہ میں پاکستان میں کھانا کھانے نہیں گیا تھا ، سارک کانفرنس میں پاکستانی ہم منصب چوہدری نثار علی خان نے مجھے لنچ کی دعوت دی لیکن خود چلے گئے ،میں نے وزیر داخلہ کے رویے پر کوئی احتجاج درج نہیں کرایا ،لیکن جو کچھ ہوا وہ ٹھیک نہیں تھا ،احتجاج اور مخالفانہ مظاہروں کی فکر اور ڈرہوتا تو پاکستان جاتا ہی نہیں۔

بھارتی نجی چینل ’’این ڈی ٹی وی ‘‘ کے مطابق ہندوستانی پارلیمنٹ میں سارک کانفرنس کے حوالے سے خطاب کرتے ہوئے راج ناتھ سنگھ کا کہنا تھا کہ انہوں نے سارک کانفرنس میں شریک ممالک کو تجویز دی ہے کہ عالمی برادری کی جانب سے دہشت گردوں پر لگائے جانے والی پابندیوں ک کا احترام ہونا چاہئے ، اچھے اور برے دہشت گردوں میں فرق رکھا گیا تو دہشت گردی کی بیخ کنی ناممکن ہو گی ،اس لئے دہشت گردی کو فروغ دینے والے ممالک کے خلاف مؤثر اقدامات ضروری ہیں۔

انہوں نے کہا کہ میں نے پاکستان میں جو کچھ کیا اور کہا وہ اپنی حدود میں رہ کر کیا لیکن یہ پڑوسی ہے کہ مانتا ہی نہیں ،میری یہی خواہش ہے کہ خدا پاکستان کو سدھ بدھ دے ۔انہوں نے کہا کہ اگر ہمیں دہشت گردی کو روکنا ہے تو اس کے لئے ضروری ہے کہ نہ صرف دہشت گرد تنظیموں بلکہ انہیں تحفظ فراہم کرنے والوں کے خلاف بھی سخت کاروائی ہونی چاہئے ،یہ نہیں ہو سکتا کہ ایک ملک کا دہشت گرد دوسرے ملک کا ’’شہید ‘‘ ہو ،ایک ملک کا دہشت گرد دوسرے ملک کا شہید کیسے ہو سکتا ہے؟ بھارتی وزیر داخلہ کا کہنا تھا کہ سارک کانفرنس میں میری تقریر نشر ہوئی یا نہیں ؟ اس بارے میں تو نہیں جانتا اور کچھ کہنا بھی مشکل ہے مگر بھارتی میڈیاکو سارک کانفرنس کی کوریج سے روک دیا گیا تھا اور انہیں اندر نہیں جانے دیا گیا ۔

مزید : بین الاقوامی /اہم خبریں


loading...