مسلم خاتون دوران پرواز ایک ایسی کتاب پڑھنے لگی کہ ائیرلائن نے دہشت گرد سمجھ کر پولیس کے حوالے کردیا، ایسی کونسی کتاب پڑھ رہی تھی؟ جان کر آپ کا دل کرے گا کہ اس ائیرلائن میں کبھی سفر ہی نہ کریں

مسلم خاتون دوران پرواز ایک ایسی کتاب پڑھنے لگی کہ ائیرلائن نے دہشت گرد سمجھ ...
مسلم خاتون دوران پرواز ایک ایسی کتاب پڑھنے لگی کہ ائیرلائن نے دہشت گرد سمجھ کر پولیس کے حوالے کردیا، ایسی کونسی کتاب پڑھ رہی تھی؟ جان کر آپ کا دل کرے گا کہ اس ائیرلائن میں کبھی سفر ہی نہ کریں

  



لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) دہشت گردی کی وارداتیں بڑھنے کے ساتھ ساتھ مغربی دنیا میں مسلمانوں کے خلاف نسلی و مذہبی تعصب بھی بڑھتا جا رہا ہے اور اکثراوقات مغربی ممالک میں مقیم مسلمانوں کو ناکردہ گناہ کی پاداش میں تضحیک کا نشانہ بنایا جاتا ہے۔ ایسے ہی گزشتہ روزبرطانیہ میں ایک مسلمان خاتون کو شام کی ثقافت پر لکھی گئی کتاب پڑھنے کے ’جرم‘ میں پولیس کی تفتیش کا سامنا کرنا پڑ گیا۔ برطانوی اخبار ڈیلی میل کی رپورٹ کے مطابق 27سالہ فائزہ شاہین 2ہفتے کے سیاحتی دورے پر ترکی گئی تھی۔ واپس برطانیہ جاتے ہوئے دوران پرواز اس نے وقت گزاری کے لیے شام کی ثقافت پر لکھی گئی کتاب پڑھنی شروع کر دی جس پر جہاز کے عملے نے اسے مشکوک سمجھ کر برطانیہ کے ڈون کیسٹر ایئرپورٹ پر پولیس کو اطلاع دے دی۔

دوران پرواز مسافر کی ایسی شرمناک حرکت کہ پائلٹ کو غصہ آگیا، جہاز چلانا چھوڑ کر مسافر کی درگت بناڈالی کیونکہ۔۔۔

رپورٹ کے مطابق جب فائزہ شاہین ایئرپورٹ پر اتری، اسے پولیس نے حراست میں لے لیا اوراس سے طویل تفتیش کی گئی اور بعدازاں رہا کر دیا گیا۔ لیڈز کی رہائشی فائزہ شاہین برطانیہ کے ادارے نیشنل ہیلتھ سروس میں ملازمت کرتی ہے۔ اس کا کہنا تھا کہ ”جہاز کے عملے اور پولیس نے میرے ساتھ مذہبی امتیاز کا سلوک کیا ہے۔ اپنے ساتھ اس توہین آمیز سلوک پر میں آنکھوں میں آنسو آگئے۔ میں بالکل بے گناہ تھی لیکن انہوں نے میرے ساتھ کسی مجرم کے جیسا سلوک کیا۔ مجھے غصہ بھی آ رہا تھا اور ذہنی طور پر بھی پریشان تھی۔ مجھے سمجھ نہیں آ رہی تھی کہ ایک کتاب پڑھنے سے لوگوں نے مجھے مشکوک کیسے سمجھ لیا۔میں نیشنل ہیلتھ سروسز میں لوگوں کو شدت پسندی سے بچانے کا کام کر رہی ہوں، میں خود کیسے شدت پسند ہو سکتی ہوں۔“

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...