اداکارہ نہ ہوتی تو ایک اچھی صحافی ہوتی :بشریٰ انصاری

اداکارہ نہ ہوتی تو ایک اچھی صحافی ہوتی :بشریٰ انصاری
اداکارہ نہ ہوتی تو ایک اچھی صحافی ہوتی :بشریٰ انصاری

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

لاہور (فلم رپورٹر)سینئر اداکارہ بشریٰ انصاری نے کہا ہے کہ شوبز میں باقاعدہ منصوبہ بندی کرکے آئی ہوں،اگر اداکارہ نہ ہوتی تو شاید ایک اچھی صحافی ضرور ہوتی،پرستاروں نے مجھے جس قدر محبت اور اپنایت دی اسے میں کبھی بھی فراموش نہیں کر سکتی۔ہفتہ کو نجی ٹی وی سے بات چیت کرتے ہوئے سینئر اداکارہ بشریٰ انصاری نے کہا کہ مجھے بچپن سے ہی اداکاری کا شوق تھا،دوسروں کی نقلیں اتارا کرتی تھی اور اسی وجہ سے اکثر ڈانٹ بھی پڑتی تھی۔بچپن کی یہی عادت مجھے آگے لے آئی اور میں اداکارہ بن گئی۔انہوں نے کہا کہ میں اتفاقیہ طور پر نہیں بلکہ ایک منصوبہ بندی کر کے شوبز کی دنیا میں داخل ہوئی اور مجھے جس قدر کامیابیاں ملیں وہ میرے لیے قیمتی اثاثہ ہیں اور پرستاروں نے مجھے جس قدر محبت اور اپنایت دی اسے میں کبھی بھی فراموش نہیں کر سکتی۔میرے علاوہ میری دو بہنوں نے بھی ٹی وی پر کام کیا جبکہ بڑی بہن نیلم بشیر معروف رائٹر ہیں اور ان کی کئی کتابیں بھی شائع ہو چکی ہیں۔بشریٰ انصاری نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ میرے والد کا تعلق شعبہ صحافت سے رہا ہے ،والد سے جس قدر محبت ملی وہ آج بھی ذہن میں نقش ہے اور دنیا سے جانے کے بعد بھی وہ ہمارے دلوں میں زندہ ہیں۔

اگر میں اداکارہ نہ ہوتی تو شاید ایک اچھی صحافی ضرور ہوتی ، اب بھی کبھی کبھار مجھے صحافی بننے کا جنون سوار ہوتا ہے مگر میں اپنے موجودہ کام سے ہی مطمئن ہوں۔

مزید : کلچر