کامیاب امیدواروں نے انتخابی اخراجات کی تفصیلات رٹیرننگ افسران کو جمع کرادیں

کامیاب امیدواروں نے انتخابی اخراجات کی تفصیلات رٹیرننگ افسران کو جمع کرادیں

 اسلام آباد،لاہور(آن لائن ،نامہ نگار) الیکشن کمیشن کی ہدایت کی روشنی میں کامیاب امیدوار انتخابی اخراجات کی تفصیلات متعلقہ ریٹرننگ افسران کے پاس جمع کرارہے ہیں،لاہور سے قومی اور صوبائی اسمبلی کے کامیاب امیدواروں کی طرف سے انتخابی اخراجات کی تفصیلات جمع کرادی گئی ہیں،خواتین اور اقلیتی مخصوص نشستوں پرانتخابی اخراجات 7اگست تک جمع کرائے جا سکیں گے۔تفصیلات کے مطابق الیکشن کمیشن کی ہدایت کی روشنی میں کامیاب امیدوار انتخابی اخراجات کی تفصیلات متعلقہ ریٹرننگ افسران کے پاس جمع کرارہے ہیں۔ پاکستان کے متوقع وزیر اعظم عمران خان نے ملک کے چاروں صوبوں سے انتخابات میں حصہ لیا۔ انہوں نے قومی اسمبلی کے 5 حلقوں سے پنجہ آزمائی کی اور پانچوں میں کامیابی حاصل کی۔ عمران خان نے لاہور سے قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 131 سے انتخابی اخراجات کی تفصیلات جمع کروا دی ہیں، جس کے مطابق انہوں نے حلقے میں انتخابی مہم پر 9 لاکھ 97 ہزار 925 روپے خرچ کیے۔ اس کے علاوہ عمران خان نے اسلام آباد سے قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 53 میں انتخابی مہم پر 38 لاکھ 11 ہزار سات سو پچاس روپے خرچ کیے۔ مسلم لیگ (ن) کے صدر میاں شہباز شریف لاہور سے قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 132 سے کامیاب ہوئے ہیں، اس حلقے میں انہوں نے 19 لاکھ 34 ہزار 447 روپے خرچ کیے، ریٹرننگ افسر کے سامنے جمع کرائی گئی ۔تفصیلات کے مطابق شہبازشریف نے گاڑیوں میں ایندھن کی مد میں 6 لاکھ جب کہ اشتہاری مہم پر11 لاکھ روپے خرچ کیے۔ پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری لاڑکانہ سے قومی اسمبلی کی نشست این اے 200 سے کامیاب قرار دیئے گئے ہیں، انہوں نے اپنے وکیل آصف سومرو کے توسط سے ریٹرننگ افسر کے سامنے انتخابی اخراجات کی تفصیلات جمع کرادی ہیں جس کے تحت انہوں نے حلقے میں 33 لاکھ 36 ہزار 106 روپے خرچ کئے۔ آصف زرداری کی ہمشیرہ فریال تالپور پاکستان پیپلز پارٹی کے ٹکٹ پر سندھ اسمبلی کے حلقہ پی ایس 10 سے کامیاب قرار پائی ہیں، انہوں نے الیکشن مہم میں 18 لاکھ 26 ہزار روپے خرچہ دکھایا ہے۔ کم وبیش 10 برس تک پنجاب کے وزیر قانون رہنے والے رانا ثناء4 اللہ اس مرتبہ صوبائی اسمبلی کی نشست پر ناکام ہوگئے تاہم قومی اسمبلی میں انہوں نے رسائی حاصل کرلی ہے۔ انہوں نے ایم این اے کی نشست کے لیے 32 لاکھ 25 ہزار روپے خرچ کیے۔ مسلم لیگ (ن) کے رہنما حمزہ شہباز کی جانب سے این اے 124 کے ریٹرننگ افسر کے روبرو انتخابی اخراجات کی جو تفصیلات جمع کروائی گئی ہیں ان کے مطابق انہوں نے 18 لاکھ 50 ہزار 625 روپے خرچ کیے۔ تحریک انصاف کے رہنما علیم خان نے لاہور سے قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 129 سے کامیابی حاصل کی، انہوں نے اپنی انتخابی مہم میں 39 لاکھ 84 ہزار500 روپے کا خرچہ ظاہر کیا ہے۔ دریں اثنالاہور سے قومی اور صوبائی اسمبلی کے کامیاب امیدواروں کی طرف سے انتخابی اخراجات کی تفصیلات جمع کرادی گئی ہیں۔خواتین اور اقلیتی مخصوص نشستوں پرانتخابی اخراجات 7اگست تک جمع کرائے جا سکیں گے۔ لاہور کے قومی اور صوبائی اسمبلی کے کامیاب امیدواروں کی طرف سے انتخابی اخراجات کے گوشوارے جمع کرادیئے گئے ہیں۔آراوز کی جانب سے اخراجات کی تفصیلات الیکشن کمیشن کو ارسال کردی گئی ہیں۔تفصیلات کے مطابق حلقہ این اے 123میں ملک ریاض نے 11 لاکھ 50ہزار روپے خرچ کئے جبکہ حلقہ ین اے 124 میں سابق وزیراعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف کے صاحبزادے حمزہ شہباز نے 18لاکھ 50ہزار625روپے خرچ ظاہرکیا۔حلقہ این اے 125میں وحید عالم نے 15لاکھ55ہزار 95روپے،حلقہ این اے 126 میں حماد اظہر نے 36 لاکھ 53 ہزار 974 روپے،حلقہ این اے 127میں علی پرویز نے 30لاکھ 78 ہزار 174روپے، حلقہ این اے 128میں روحیل اصغر نے 16 لاکھ 51ہزار 334روپے،حلقہ این اے 129 سے سردار ایاز صادق نے 4 لاکھ 88 ہزار 707 روپے ،ایازصادق نے 2 لاکھ روپے گاڑیوں کے تیل کی مد میں خرچ کیا ،حلقہ این اے 129 سے پاکستان تحریک انصاف کے ناکام امیدوار عبدالعلیم خان نے انتخابی میم میں39 لاکھ 84 ہزار500 روپے ،حلقہ این اے 130کے شفقت محمود نے 38لاکھ90ہزار کا خرچہ کیا ،شفقت محمود نے پبلسٹی پر 16لاکھ80ہزار روپیہ خرچ کیا۔حلقہ این اے 131 میں عمران خان نے 9لاکھ 97ہزار425روپے، اسی طرح حلقہ این اے 132میں میاں شہبازشریف نے 19لاکھ 34 ہزار447روپے،حلقہ این اے 133میں پرویز ملک نے 23لاکھ52ہزار36روپے ،حلقہ این اے 135میں ملک کرامت نے 37 لاکھ 55 ہزار 358 روپے، اسی طرح حلقہ پی پی 160سے محمود الرشید نے 19 لاکھ 50 ہزار 600 روپے،پی پی162 میں یاسین سوہل نے 17 لاکھ روپے اورحلقہ پی پی 148 میں شہبازنے 10لاکھ 2 ہزار روپے اخراجات کی تفصیل آراوز کو جمع کروائی ہے ،ریٹرننگ افسروں نے مذکورہ امیدواروں کی جانب سے جمع کروائے گئے اخراجات کی تفصیلات الیکشن کمیشن کو ارسال کردی ہیں۔

مزید : صفحہ اول