اینٹی کرپشن کا ایک اور کارنامہ نقاب متاثرین کو دھمکیاں ، درخواستیں غائب

اینٹی کرپشن کا ایک اور کارنامہ نقاب متاثرین کو دھمکیاں ، درخواستیں غائب

بہاولپور(ڈسٹرکٹ رپورٹر) اینٹی کرپشن افسران کاایک اورکارنامہ سامنے آگیا ضلعی نظامت کے دورمیں کروڑوں کے فنڈز سے تعمیرہونیوالے شاہدرہ پارک کانام تبدیل کرکے پی ایچ اے افسران نے ٹھیکیدار سے ملی بھگت کرکے سٹی پارک کے نام پر دوبارہ فرضی تعمیرکے نام پر کروڑوں (بقیہ نمبر36صفحہ12پر )

روپے نکلوالئے شہری کی طرف سے نیب کودی جانیوالی درخواست اینٹی کرپشن بہاولپورکوریفرکی گئی جو اینٹی کرپشن آفیسرنے درخواست دینے والے کودھمکیاں دے کردرخواست داخل دفترکراڈالی کروڑوں کے فنڈزہضم ہوگئے۔ تفصیل کے مطابق سابق ضلعی ناظم چوہدری طارق بشیرچیمہ نے شاہدرہ کے علاقہ میں ایک پارک تعمیرکرایا جس میں عالیشان بلڈنگ گراسی پلاٹ موٹریں چاردیواری گرل فٹ پاتھ اورجھولے وغیرہ بھی لگوائے گئے بعدازاں محکمہ پارک اینڈہارٹیکلچر اتھارٹی نے اس پارک کواپنی تحویل میں لینے کی بجائے ٹھیکیدار سے ملی بھگت کرکے اس پارک کوسٹی پارک کانام دیا اوراس کی تمام ترتعمیردوبارہ ظاہرکرکے سرکاری خزانے سے کروڑوں روپے نکلوالیے مقامی شہری محمدیوسف نے نیب ملتان کوکمپلینٹ نمبر1668/2018 درج کرائی تواینٹی کرپشن ملتان نے ڈائریکٹر اینٹی کرپشن بہاولپورکوکاروائی کاحکم دیابعدازاں اسسٹنٹ ڈائریکٹرٹیکنیکل مزمل حسین کوانکوائری آفیسرمقررکیاگیا انہوں نے کروڑوں روپے کے فراڈ کی تحقیقات کرنے کی بجائے درخواست دہندہ کوسنگین نتائج کی دھمکیاں دفتر سے بھگادیا اوردونمبرمافیاسے ساز بازکرکے درخواست داخل دفترکردی واضح رہے کہ اسسٹنٹ ڈائریکٹر ٹیکنیکل مزمل حسین نے محکمہ انہار کے سرکاری ریسٹ ہاؤس پربھی غیرقانونی قبضہ کررکھاہے وہاں پربیٹھ کر سرکاری محکموں سے مک مکاکرتاہے اس حوالے سے اسسٹنٹ ڈائریکٹر مزمل حسین نے کہاکہ میرٹ پرکاروائی کرتاہوں درخواستوں پرافسران کیخلاف کاروائی کرناضرورنہیں ہے۔

متاثرین کو دھمکیاں

مزید : ملتان صفحہ آخر