اب مخالفین کو بتاؤں گا کہ اپوزیشن کیسے کی جایے ہے

اب مخالفین کو بتاؤں گا کہ اپوزیشن کیسے کی جایے ہے

جام پور(نمائندہ خصوصی) سابق ڈپٹی سپیکر پنجاب اسمبلی سردار شیر علی خان گورچانی نے کہاہے کہ میراضلع راجن پور کے استحصالی ٹولہ کے ساتھ مقابلہ ہے اور یہ مقابلہ جاری رہے گا(بقیہ نمبر55صفحہ7پر )

تاہم اداروں کے ساتھ میری کوئی لڑائی نہیں ہے ٗ انہوں نے کہاکہ ہارجیت سیاست کا حصہ ہے لیکن جس طرح میری جیت کو ہار میں تبدیل کیاگیا وہ عوام کے قابل قبول نہیں ہے ٗ میرے حلقہ کے عوام الیکشن کمیشن آف پاکستان سے یہ پوچھنے میں حق بجانب ہیں کہ جب ڈیڑھ درجن سے زائد پولنگ سٹیشنز پرووٹوں کی گنتی کا عمل جاری تھا تو مخالف امیدوار کی کامیابی کا اعلان کیسے کردیا گیا ٗ انہوں نے کہاکہ عوام کے ساتھ میرانہ ٹوٹنے والا رشتہ ہے اور مجھے اس بات پرفخر ہے کہ میں نے ضلع راجن پور کے عوام کو سیاسی شعور دیا اور تھانہ کلچر کی سیاست پر یقین رکھنے والے سیاستدانوں کے عوام کے سامنے جھکنے پر مجبور کردیا ٗ دس سال اقتدار میں رہاتو مخالفین کو بتادیا کہ حکومت کیسے کی جاتی ہے اب دھونس دھاندلی سے اپوزیشن میں بیٹھنے پر مجبور کردیا گیا ہوں تو بتادوں گا کہ اپوزیشن کیسے کی جاتی ہے ۔ سردار شیر علی خان گورچانی نے اپنے ان خیالات کا اظہاراپنے دورہ یونین کونسل کوٹ طاہر کے دوران صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہاکہ مجھے فخر اپنے دس سال کے اقتدار میں نہ تو کسی کے ساتھ انتقامی کاروائی کی ہے اور نہ ہی ناجائزمقدمات درج کرواکر کسی کو اپنے ساتھ شامل کرنے کی کوشش کی ٗ میں نے لوگوں کو عزت اور جواب میں لوگوں نے میری توقعات سے بڑھ کر مجھے رسپانس دیا ۔ سردار شیر علی خان گورچانی نے کہاکہ مجھے یہ اعزاز حاصل ہے جس پر مجھے فخر بھی ہے کہ چالیس چالیس سال تک اقتدار میں رہنے والے بابے جو خود کو بہت طاقت ور تصور کرتے ہیں وہ اکیلے اکیلے آکر میرا مقابلہ نہیں کرسکتے ٗ اگر الیکشن فیئر ہوتے تو بھی یہ مجھ سے جیت نہیں سکتے تھے ۔ انہوں نے کہاکہ ان لوگوں نے میرے خلاف اتحاد تو کرلیا ہے لیکن ایک دوسرے کے متعلق ان کے اندر آج بھی صاف نہیں ہیں میں دعوے سے کہتا ہوں کہ ان کا غیر فطری اتحاد مزید چھ مہینے تک نہیں چل سکے گا اور مجھے گالیاں دینے والے بہت جلد ایک دوسرے کو گالیاں دیتے نظر آئیں گے۔ سردار شیر علی خان گورچانی نے کہاکہ اگر اقتدار کے نشے میں کسی نے میرے دوستوں کو انتقامی کاروائی کا نشانہ بنانے کی کوشش کی تو وہ یاد رکھیں کہ شیر علی گورچانی میرانام ہے ٗ نہ میں نے خود کسی مخالف کے خلاف کبھی انتقامی کاروائی کا سہارا لیا اور نہ یہ برداشت کروں گا کہ کوئی میرے ساتھیوں کیخلاف انتقامی کاروائی کرے۔دریں اثناء انہوں نے وائس چیئر مین یونین کونسل کوٹ طاہر رانا اعجاز احمد کے ڈیرے پر جاکر ان سے ان کے والد کی وفات پر اظہار تعزیت کیا ۔جبکہ چیئر مین یونین کونسل کوٹ طاہر سردار منصور اختر خان لغاری کے ڈیرے پر عمائدین علاقہ سے بھی ملاقاتیں کیں۔اسی طرح سابق انسپکٹر پنجاب پولیس ملک لیاقت حسین پرہار کی رہائش گاہ پر جاکر ان سے ملاقات کی اور موجودہ سیاسی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا ۔ اس موقع پرچیئر مین میونسپل کمیٹی حاجی محمد اکرم قریشی ٗ سردار منصور اختر خان لغاری ٗ سردار منصور خان مستوئی ایڈووکیٹ ٗ ملک فدا حسین کھوکھر ٗ میاں ظہور احمد خوجہ ٗ فاروق خان گوپانگ ٗ ملک غلام مصطفی ڈڈا ٗ مرزا فرحان خان ٗ رائے واجد حسین ٗ رانا محبت علی ٗ حسیب رسول اوردیگر بھی موجودتھے ۔

شیر علی گورچانی

مزید : ملتان صفحہ آخر