چیف جسٹس کا نشتر‘ چلڈرن کمپلیکس کا دورہ‘ مریضوں کو بہترین سہولتیں فراہم کرنیکا حکم

چیف جسٹس کا نشتر‘ چلڈرن کمپلیکس کا دورہ‘ مریضوں کو بہترین سہولتیں فراہم ...

ملتان (وقائع نگار) چیف جسٹس آف پاکستان ثاقب نثار نے نشتر ہسپتال اور چلڈرن کمپلیکس کا اچانک دورہ کیا۔ انہوں نے لیبر روم ایمرجنسی امراض اطفال وارڈ نمبر 19کا دورہ کیا۔ انہوں نے ہسپتال میں دی جانے والی سہولیات پر عدم اطمینان کا اظہار کیا جبکہ مریضوں کو دی جانے والی طبی سہولیات کی بہتری کے احکامات دیئے۔ وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر مصطفی کمال پاشا اور قائم مقام ایم ایس ڈاکٹر عبدالحفیظ بھی موجود تھے۔ چیف جسٹس ثاقب نثار نے صفائی کے معیار کو بھی بہتر بنانے کا حکم دیا۔ اس موقع پر نشتر ہسپتال میں انتظامات کے حوالے سے سوال پر چیف جسٹس ثاقب نثار نے جواب دیا کہ نشتر ہسپتال میں حالات ہوری بیل (خوفناک) ہیں‘ اس کے بعد چیف جسٹس ثاقب نثار چلڈرن کمپلیکس پہنچ گئے اور سیدھے ایمرجنسی وارڈ میں گئے جہاں انہوں نے بستروں کی گندی چادریں دیکھ کر شدید برہمی کا اظہار کیا۔ ہسپتال کے انتظامی افسر نے جو چیف جسٹس کا انتظار کررہے تھے تاہم انکی آمد کا سن کر ڈین پروفیسر ڈاکٹر مختیار حسین بھٹی اور ایم ایس ڈاکٹر مظہرالخالق و دیگر ایمرجنسی وارڈ پہنچے اور انہیں بریفنگ دینا شروع کی کہ ایمرجسی وارڈ کی عمارت بہت پرانی ہے جس پر چیف جسٹس نے کہا کہ انہوں نے عمارت کی بات نہیں کی بلکہ گندی چادروں کی بات اور صفائی پر توجہ کی بات کی ہے۔ اس کے بعد چیف جسٹس کو ایم ایس نے آگاہ کیا کہ سول ہسپتال جس عمارت میں کام کررہا ہے وہ چلڈرن کمپلیکس کی ملکیت ہے مگر وہ زبردستی قابض ہیں۔ چیف جسٹس نے اس حوالے سے اپنے عملہ کو کہا کہ وہ اس معاملہ کا جائزہ لیں۔

ہسپتال دورہ

مزید : کراچی صفحہ اول