بلوچستان،مویشی منڈیوں میں سپرے نہ ہونے سے کانگو وائرس پھیلنے کاخطرہ

بلوچستان،مویشی منڈیوں میں سپرے نہ ہونے سے کانگو وائرس پھیلنے کاخطرہ

  

کوئٹہ (صباح نیوز)بلوچستان کی مویشی منڈیوں میں سپرے نہ ہونے سے کانگو وائرس پھیلنے کا خطرہ بڑھ گیا۔ ہسپتال لائے گئے 24 میں سے 11 افراد میں مرض کی تشخیص ہو گئی۔ غریب مریضوں   نے کہا  کہ تشخیص میں تاخیر انھیں موت کے منہ میں لے جاتی ہے۔کوئٹہ سمیت بلوچستان کے مختلف علاقوں اور ہمسائیہ  ملک افغانستان سے عید قربان کے لئے قربانی کے جانور لانے کا سلسلہ شروع ہو گیا، اس دوران کانگو وائرس کے بڑھنے کا خطرہ بڑھ جاتا ہے۔ فاطمہ جناح چسٹ ہسپتال کے وبائی امراض کے وارڈ میں اب تک ہمسائیہ  ملک سمیت صوبے بھر سے 24 مریض لائے گئے۔ 11 مریضوں میں مرض کی تشخیص ہوئی جنہیں ایک مریض زندگی کی بازی ہار گیا۔ زیرعلاج مریض   نے بتایا کہ صوبے کے دوردراز علاقوں میں طبی سہولیات کا فقدان ان کے لئے مشکلات کا سبب ہے۔وبائی امراض وارڈ کی انتظامیہ   نے بتایا کہ وارڈ میں مریضوں کے لئے طبی سہولیات کا فقدان ہے، بیڈز کم ہونے کی وجہ سے مریضوں کو طبی امداد کی فراہمی میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔وبائی امراض وارڈ میں مرض کی تشخیص کے لئے بنائی گئی جدید لیبارٹری بند ہونے کے باعث مریضوں کے خون کے نمونے آغا خان یا نیشنل انسٹی ٹیوٹ اف ہیلتھ بھیجوائے جاتے ہیں جس میں 1 ہفتے کا وقت لگ جاتا ہے۔

مزید :

علاقائی -