سینیٹ میں ہارس ٹریڈنگ نہیں ہوئی، سینیٹرز کے استعفوں کی بات گیدڑ بھبھکی: شبلی فراز

سینیٹ میں ہارس ٹریڈنگ نہیں ہوئی، سینیٹرز کے استعفوں کی بات گیدڑ بھبھکی: شبلی ...

  

اسلام آباد (این این آئی)سینیٹ میں قائد ایوان شبلی فراز نے کہا ہے کہ اپوزیشن کے ساتھ مل کر قوانین میں موجود خامیوں کو دور کرنے کیلئے تیار ہیں۔اتوار کو ایک انٹرویو میں شبلی فراز نے کہاکہ بیلٹ میں ہمیں امیدوار کی صورت میں فوقیت حاصل تھی۔شبلی فراز نے کہا کہ مولانا فضل الرحمان نے ہمارے اْن کے پاس جانے کو کمزوری سمجھا، مولانا کا تو اپنے ووٹرز پر خود کنٹرول نہیں تھا تو ہم نے کیا ان سے ووٹ مانگنے تھے۔انہوں نے کہا کہ مولانا نے مہمانداری کی پشتون روایات کا بھی خیال نہیں کیا، علی امین گنڈاپور نے مولانا کو گھر تک محدود کر دیا ہے۔چیئرمین پیپلز پارٹی کے حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے شبلی فراز نے کہاکہ بلاول بھٹو نے جب کہا کہ پیسے اْن سے پکڑ لو اور ووٹ نہ دو تو ہمیں دھچکا لگا، سینیٹ الیکشن میں کوئی ہارس ٹریڈنگ نہیں ہوئی۔انہوں نے کہا کہ بلاول نے پیسوں کا بیان اس لیے دیا کیونکہ اْن کی ماضی کی قیادت ایسے کاموں میں مہارت رکھتی تھی جبکہ اپوزیشن سینیٹرز کے استعفوں کی بات صرف گیدڑ بھبھکیاں ہیں۔انہوں نے کہاکہ اپوزیشن کے پاس اب بیچنے کو کچھ نہیں بچا، اپوزیشن دوبارہ تحریک عدم اعتماد لاتی ہے تو وہ تحریک عدم استحکام ہو گی۔ سینیٹرز پر کوئی دباؤ نہیں تھا، ان پر صرف ضمیر کا دباؤ ہوتا ہے۔انہوں نے کہاکہ اپوزیشن کے جن سینیٹرز نے تحریک عدم اعتماد کے خلاف ووٹ دیا ہم انہیں نہیں جانتے، جنہوں نے اپنی پارٹی کو ووٹ نہیں دیا انہیں کیا کسی اور نے منتخب کرایا تھا؟انہوں نے کہا کہ اداروں پر تنقید کرنے والے خود اس صورتحال کے ذمہ دارہیں، جب نااہلی سے اوپن فیلڈ چھوڑیں گے تو یہ ریاست ہے کسی نے تو ملک کو سنبھالنا ہے۔شبلی فراز نے کہا کہ عمران خان نے جب اوپن بیلٹ کی بات کی تو سب جماعتوں نے اس کی مخالفت کی تھی لیکن ہم اپوزیشن کے ساتھ مل کر قوانین میں موجود خامیوں کو دور کرنے کے لیے تیار ہیں۔ 

شبلی فراز

مزید :

صفحہ اول -