ہر فورم پر صوابی کی ترقی کیلئے آواز اٹھائی ہے: اسد قیصر

  ہر فورم پر صوابی کی ترقی کیلئے آواز اٹھائی ہے: اسد قیصر

  

چھوٹالاہور(تحصیل رپورٹر)سپیکرقومی اسمبلی اسدقیصرنے تحصیل لاہورکے نواحی گاؤں جلبئی میں ایک بڑے عوامی اجتماع وتمباکوکاشتکارکنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ میں آج جوکچھ ہوں یہ صوابی کے لوگوں کی وجہ سے ہوں اسلئے مجھے ہر فورم اورہرموقع پرسب سے پہلے صوابی کی تعمیروترقی اوریہاں کے لوگوں کی فلاح اوربھلائی کیلئے آواز اُٹھانی ہے چنانچہ 300 فیصدتمباکوٹیکس کی بھرپورمخالفت اورزبردستی کرکے ختم کرادیاصرف یہی نہیں اب ٹوبیکوبورڈمیں کاشتکاروں کو زیادہ سے زیادہ نمائندگی بھی دلائیں گے تاکہ وہ اپنے بارے بہتر فیصلے خودکرسکیں جسکے علاوہ دیگرساری زرعی اجناس کی فروخت کیلئے بھی بیرونی منڈیوں کی تلاش اورہماری کوششیں جاری ہیں اس موقع پر سپیشل ایڈوائزر ٹوچیف منسٹر عبدالکریم خان، تحصیل ناظم لاہورسہیل خان اوریوتھ صدر تحصیل لاہورعرفان شیرنے بھی خطاب کیا سپیکراسد قیصرکاکہناتھاکہ مہنگائی سے ہمیں انکارنہیں مگراسکاقصوروارآپس میں باری لگائے ہوئے سابقہ حکومتیں ہیں جنکی چالیس سالوں کی حکومتوں کے نتیجہ میں واپڈا،پی آئی اے، سٹیل ملز اوردیگرمنافع بخش قومی ادارے خسارہ میں رہے اورماشااللہ ان ساری حکومتوں کا مولانافضل الرحمن ہردورمیں مضبوط سپورٹر اور پشت پناہ بنے رہیں اورجب کسی ملک منافع بخش ادارے خسارہ میں رہیں توملک چلانے کیلئے پیسے کہاں سے آتے پہلی بار ہم نے بہت سخت فیصلے کئے تاکہ ملک اپنے پیروں پرکھڑاہوسکے 22 کروڑعوام میں صرف16 لاکھ افراد ٹیکس دیتے ہیں لوگ ٹیکس دینے کے عادی نہیں حالانکہ کوئی بھی ملک یاتو تیل اورگیس جیسے قدرتی ذخائرسے یاپھرلوگوں کے ٹیکسوں سے چلتا ہے مگرٹیکس نہ دینے میں لوگوں کا بھی قصورنہیں بلکہ اُن حکمرانوں کا ہے جن کے متعلق لوگوں کا یقین رہا کہ انکے ٹیکسوں سے حکمرانوں کی عیاشیاں ہورہی ہیں یاانکے ٹیکسوں کے پیسے چوری ہورہے ہیں اورلوگوں کو انکے ٹیکسوں کے عوض کسی بھی ریلیف کی کوئی توقع نہیں تھی میں آج پوری قوم کو یقین دلاتاہوں کہ انکے ٹیکسوں کی پائی پائی امانت سمجھی جائیگی انہیں اسکاریلیف دیاجائیگاانکے ٹیکس چوری نہیں ہونگے انکے ٹیکس کے پیسوں سے حکمران عیاشیاں نہیں کرینگے بلکہ وہ سارے پیسے ان پاکستانی عوام کی فلاح وبہبود پر ہی خرچ کئے جائیں گے سپیکراسدقیصرکایہ بھی کہناتھاکہ جب ہمیں حکومت سونپی گئی تو خزانہ میں صرف 20 دنوں کے وسائل موجود تھے تنخواہیں بھی پورے نہیں ہورہے تھے مگرعمران خان کی بہترین قائدانہ صلاحیتوں اوردوڑدھوپ کے نتیجہ میں تباہی کے دہانے پہنچے ملک بیٹھنے نہیں دیاگیااورہم نے پہلاکام معیشت کی بہتری کیلئے خارجہ پالیسی میں تبدیلی لاکرنئی دنیاسے بھی تعلقات استوارکئے سب سے پہلے اسلامی دنیاسے روابط اورتعلقات مضبوط کرکے بحال کئے اب روس اورحتیٰ کہ امریکہ سے بھی تعلقات بحال کئے ہم افغانستان سے بھی تعلقات بہتر کرنے کے خواہاں ہیں ہم سنٹرل ایشیا تک رسائی حاصل کرکے دم لیں گے تاکہ ہم ان تمام ممالک کی منڈیوں تک تجارت قائم کرکے اپنی زرعی اجناس اوردیگرمصنوعات پہنچاسکے اورآج ہم جن مشکلات سے دوچار ہیں یہ زیادہ لمبا عرصہ تک نہیں رہیں گے انشااللہ اگلے پانچ چھ مہینوں میں ہماری حالت سنورجائیگی ان مشکلات سے چھٹکارامل جائیگا اسی ماہ اگست یاستمبرکے پہلے ہفتہ میں اکنامک زون کاافتتاح متوقع ہے جس سے لاکھوں نوجوانوں کو روزگارکے مواقع میسرآئیں گے انکامزیدکہنا تھاکہ ماضی میں مولانافضل الرحمن خودکو بہترین وزیر اعظم پیش کرنے کی یقین دہانی کراتے ہوئے امریکہ سے تعاون کی بھیک مانگ چکے ہیں مولاناصاحب کی میں قدرکرتاہوں مگر وہ اسلام نہیں اسلام آباد چاہتے ہیں جس کیلئے جب اُن سے کچھ نہ بن پڑاتواب ہمارے خلاف نہایت خطرناک پروپیگنڈے شروع کرنے پر اُتر آئے پہلے ہمیں یہودیوں سے اوراب ہمیں قادیانیوں سے جوڑنے کی غلیظ کوششیں کرنے لگے لیکن میں آج واضح کرناچاہتاہوں کہ ہمارامذہب اورعقیدہ نہ چھیڑاجائے ورنہ میں پھر آپ سے سپیکرقومی اسمبلی کی حیثیت سے اسدقیصر کی حیثیت سے جواب دینے پرمجبورہونگا میں قومی اسمبلی جہاں قانون سازی ہوتی ہے وہاں میرے ہوتے ہوئے کوئی ناموس رسالت ﷺ اورعقیدہ ختم نبوت ﷺ کے منافی قانون لائے اس سے توبہتر ہے کہ میں چوڑیاں پہن لوں انکامزیدکہناتھاکہ ناموس رسالت ﷺ پر میں اورمیری اولاد بھی قربان ہوجائے حضور اقدس ﷺ میرے لئے میرے والدین اورمیری اولاد سے بھی مقدم ہیں عوام انکے ان الزامات پر کان نہ دھرے یہ صرف الزامات ہیں جسمیں کوئی حقیقت اورصداقت نہیں الحمدللہ ہم مسلمان ہیں اورختم نبوت ﷺ پرایمان رکھتے ہیں اور الحمدللہ ہمیں اللہ نے موقع دیا تو اپنی گزشتہ حکومت میں نجی سود کے خلاف قانون سازی کرائی فحش فلموں کے خلاف قانون پاس کیا عقیدہ ختم نبوت ﷺ سے متعلق مضامین تعلیمی نصاب کا حصہ بنایامساجد میں سولر سسٹم مہیاکرائے مساجد کے خطیب حضرات کیلئے ماہوار وظائف کی فراہمی کیلئے اقدامات اُٹھائیں جواجراء کے آخری مراحل میں ہیں سکولوں میں ناظرہ وحفظ قرآن لازمی قراردیا اورملک کا سب سے بڑادینی وعلمی درسگاہ دارلعلوم حقانیہ اکوڑہ خٹک کی تعمیرنو کرائی جس پر آج بھی کام جاری ہے مگرمولاناصاحب بھی زرہ وضاحت کرکے بتائیں کہ انہیں بھی توپانچ سالوں کیلئے صوبائی حکومت ملی باقی چالیس سالوں کی تمام حکومتوں میں ہرحکومت کافرنٹ لائن اتحادی بھی رہے تو انہوں نے کونسا اسلامی کارنامہ سرانجام دیا۔؟ انکے ہوتے ہوئے مشرف دورمیں جامعہ حفصہ اورلال مسجد کاکیاحشر اورکیسے بنایاگیا معصوم دینی طلبا وطالبات کوکیوں بے دردی سے شہیدکرایاگیا اُس وقت مولانا صاحب کہاں تھے۔؟ اس موقع پر سپیکر اسدقیصرنے جلبئی لوگوں کی ڈیمانڈپرانہیں یقین دہانی کراتے ہوئے کہاکہ مطلوبہ سڑکوں کی تعمیرکی فہرست تیار کرکے فراہم کریں تاکہ انہیں اپنی پی سی ون میں شامل کرسکوں آبیاری سے محروم زرعی اراضی کیلئے ٹیوب ویلزبنانے کیلئے ایم پی اے عبدالکریم خان اورایم این اے عثمان خان ترکئی سے بات کرونگا بجلی کے مسائل حل کرانے کیلئے پیسکوچیف سے رابطہ کرتاہوں مگر لائن لاسزبھی پوری کرنے میں آپ لوگوں سے تعاون مانگتاہوں کیونکہ اس وقت ملک کو وسائل کی بہت بڑی ضرورت ہے جسکے علاوہ 22 کلومیٹرسوئی گیس فراہمی کی منظوری ہوچکی ہے اورگیس پائپ بھی پہنچائی جاچکی ہیں انشااللہ ایک سال میں گھرگھرگیس پہنچائی جائیگی اجتماع کے احتتام پرسپیکراسد قیصرنے جلبئی کی معروف سیاسی شخصیت سابق اُمیدوار ضلع کونسل محمدریاض کے حجرہ میں پی ٹی آئی کی پرچم کشائی کی اورانہیں دیگررشتہ داروں اورحلقہ احباب کے ہمراہ پی ٹی آئی کی ٹوپیاں پہناکر باضابطہ طورپراپنی پارٹی میں شامل کیا۔

مزید :

صفحہ اول -