دہشت گرد کا کوئی دین ومذہب نہیں ہوتا‘ ڈی پی او

    دہشت گرد کا کوئی دین ومذہب نہیں ہوتا‘ ڈی پی او

  

الپوری(ڈسٹرکٹ رپورٹر) شا نگلہ کے ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر رسول شاہ نے کہا ہے کہ دہشت گرد کا کوئی دین ومذہب نہیں، ہم سب کو مل کراس ناسور کو ختم کرنا ہوگا، ظالم کا ہاتھ روکنا اور مظلوم کی مدد کرنا عین عبادت ہے، ہمیں اپنے شہیدوں پر فخر ہے جنہوں نے ملک وقوم کی بقا کیلئے جام شہادت نوش کی موجودہ حالات میں ہماری پولیس دنیا کی بہترین پولیس فورس میں شمار ہوتی ہے جوکہ سخت ترین دور،دہشت گردی اور وسائل کی کمی کے باوجود انتہائی جانفشانی سے ڈیوٹی دے رہی ہے اس مشکل دورمیں پولیس کی بے پناہ قربانیاں ہیں اور مزید بھی ہماری پولیس فورس چوکس اور ثابت قدم رہے گی تمام پولیس انتہائی اہمیت رکھتے ہیں،خیبر پختون خوا پولیس نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں صف اول کا کردار ادا کرتے ہوئے آج ملاکنڈ ڈویژن اور پورا صوبہ امن کا گہوارہ بنا ہوا ہے۔خراب حالات میں سوات میں بذات خود ڈیوٹی سر انجام دی،پولیس کے ساتھ سول سوسائٹی کی قربانیا ں تاریخی ہیں۔حق، انصاف اور پائیدار امن کیلئے پولیس فورس اور سول سوسائٹی کی قربانیاں لازوال ہیں،پولیس فورس نے اپنے سینے تھان کر دہشتگردوں کا مقابلہ کیا، ہمارے حوصلے پست ہوئے نہ ہونگے۔پولیس شہید کو کبھی بھی بھولا نہیں جاسکتا، ان کی خون کے نذرانے سے ملک میں پائیدار امن اور استحکام نصیب ہوا۔خیبر پختونخوا پولیس کی دہشتگردی کے خلاف جنگ میں قربانیاں دنیا کے سامنے ہیں۔ان خیالات کاا ظہار اتوار کے روز یوم شہدائے پولیس کو خراج عقیدت پیش کرنے کیلئے پولیس لائن الپوری میں ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔انھوں نے کہا کہ ہمیں اپنے شہیدوں پر فخر ہے جنہوں نے ملک وقوم کی بقا کیلئے جام شہادت نوش کی ہے۔پولیس فورس میں نئے بھرتی ہونے والے نوجوان نسل کوملک و قوم کی تحفظ کیلئے تیار کیا جارہا ہے، تمام پولیس انتہائی اہمیت رکھتے ہیں۔ پولیس کے اعلیٰ حکام کی کوشیشوں سے محکمہ پولیس میں بہت بہتری آگئی ہے۔تقریب میں مقررین نے پولیس جوانوں کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ آپ شیر ہیں اور شیر کھبی مردار نہیں کھاتا، اور ہمیشہ تیار اور چوکس رہتا ہے۔ ہماری تاریخ لازوال قربانیوں اور شہادتوں سے بھری پڑی ہیں، ہم اپنے شہداؤں میں حضرت حمزہ ؓ۔حضرت عثمانؓ۔حضرت عمر ؓ،حضرت امام حسین ؓ ہمارے لئے مشعل راہ ہیں۔ تقریب میں شہداء کی ایصال ثواب اور بلند درجات کیلئے دعامانگی گئی۔اس موقع پر پولیس پریڈ اور بینڈ کا شاندار مظاہرہ کیا گیا،پولیس نے خون دے کر اس چمن کی ابیاری کی،پولیس کی قربانی کی وجہ سے آج یہ خطہ امن کا گہووارہ بناہے،زندہ قومیں اپنے محسنوں کو کبھی نہیں بھولا کرتی۔ شا نگلہ پولیس کی جانب سے گزشتہ چاردنوں کے دوران شہداء کے یاد میں مختلف تھانوں کے سامنے شہداء کیمپ لگائے گئے،ڈسٹرکٹ ہسپتال الپوری میں خون عطیہ کیا گیا، شہداء کے قبروں پر پھولوں کے چادر چڑھاکر سلامی دی گئی۔ تقریب سے شا نگلہ سے رکن قومی اسمبلی ڈاکٹر عباد اللہ،سینٹر مولانا راحت حسین،اخترعلی چٹان و دیگرمشران نے خطاب کیا۔یوم شہداء کے تقریب میں،اسسٹنٹ کمشنر الپوری فدالکریم،چیئرمین ڈی ار سی کمیٹی بحر الدین خان،حاجی عبدالمولا، ڈی ایس پی سرکل امجد علی،ڈی ایس پی ہیڈ کوارٹر حبیب اللہ خان، محمد یونس،ریٹائر پولیس افیسر بحرا لدین خان، شہدا کے لواحقین، مختلف تھانوں کے ایس ایچ اوزاور دیگر سیاسی،سماجی،سول سوسایٹی نمائندوں نے شرکت کی،تقریب کی شرکاء میں شامل شہدا کے والدین،عزیز و اقا رب نے اپنے جوانوں کو ملک و قوم پر قربان کرنے کو فرض قرار دیتے ہوئے فخریہ جملے کہے اور ملک و قوم پر اپنی جان نچھاور کرنے سے بھی دریغ نہ کرنے کا عہد کیا۔ ملک و قوم کو فخر ہے ان بہادر نوجوانوں نے اپنی زندگی کی شمع گل کر ملک کو اپنی خون سے روشن کیا آج ہم جس فضاء میں سانس لے رہے ہیں جوانوں کی اس قربانی کا مرہون منت ہے انھوں نے کہا کہ اپنے ملک اور قوم کی دفاع،لوگوں کی مال و جان کی حفاظت ہم پر فرض اور قرض ہے اور ہم اس قرض کو ادا کرتے رہیں گے۔تقریب کے اخیر میں بہترین کارکردگی دکھانے والوں کو ٹرافی،شیلڈ دئے گئے اور لواحقین میں تحائف تقسیم کئے گئے۔۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -