موسمیاتی تبدیلی ایک بڑا چیلنج ہے‘ اشتیاق اُرمڑ 

موسمیاتی تبدیلی ایک بڑا چیلنج ہے‘ اشتیاق اُرمڑ 

  

پشاور (سٹاف رپورٹر) خیبر پختونخوا کے وزیر جنگلات، جنگلی حیات اور ماحولیات اشتیاق ارمڑ نے کہا کہ موسمیاتی تبدیلی ایک بڑا چیلنج ہے اور ماحولیاتی آلودگی سے چھٹکارا حاصل کرنے کے لئے بہترین حکمت عملی اپنا نا ہو گی لہذا بڑے پیمانے پر شجر کاری کے ذریعے ہی اس چیلنج سے نمٹا جا سکتا ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے پشاور میں ایک تقریب سے خطاب کے دوران کیا۔ صوبائی وزیر نے کہا کہ بدقسمتی سے پی ٹی آئی حکومت سے پہلے حقیقی معنوں میں جنگلات کے فروغ اور ترقی اور تحفظ کے حوالے سے سابقہ حکومتوں نے حددرجہ غفلت کا مظاہرہ کیا ہے جس کا واضح ثبوت یہ ہے کہ نہ تو کوئی قانون سازی ہو ئی ہے اور نہ اس بارے میں کوئی موثر اقدامات کئے گئے ہیں یہی وجہ ہے کہ ماحولیاتی بحران سے نجات حاصل کس طرح حاصل کریں ہم نے قلیل عرصے میں نہ صرف جامع حکمت عملی او رپالیسی مرتب کی بلکہ اب تیزی سے اس کو قابل عمل بھی بنا رہے ہیں۔ اشتیاق ارمڑ نے کہا کہ موجودہ حکومت شجرکاری کے علاوہ دریاؤں، نہروں اور نالوں کو صاف کرنے کی مہم شروع کر دی ہے اور تمام موٹلز سروس سٹیشنز، کرشنگ مراکز والوں کو نوٹسز جاری کرکے اور گندہ استعمال شدہ پانی صاف چینلز میں گرانے سے منع کر دیا ہے۔ صوبائی وزیر نے کہا کہ خیبر پختونخوا کے مختلف اضلاع میں ایک ارب سے زائد پودے لگائے گئے ہیں اب نئے ضم شدہ اضلاع اور صوبہ بھر کے بنجر میدانی علاقوں ک ساتھ ساتھ پہاڑی علاقوں میں بھی اس دفعہ زیادہ تعداد میں پودے اگائے جائیں گے تاکہ آئندہ نسلوں کو صاف ستھرا اور سرسبز ماحول فراہم ہو سکے۔ انہوں نے یوکلپس (لاچی) کے حوالے سے کہا کہ ماہرین نے اس بارے تین سیمینار و ورکشاپ منعقد کرائے ہیں اور اس کے فوائد اور کاشت کے بارے میں لوگوں میں شعور اجاگر کیا ہے۔ اشتیاق ارمڑ نے لوگوں سے اپیل کی کہ مون سون شجرکاری بڑھ چڑھ کر حصہ لیں زیادہ سے زیادہ پودے اگائیں اور اب تک لگائے جانے والے پودوں کی پرورش اور بہتر دیکھ بھال کو بھی یقینی بنایا جائے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -