ڈاکٹر شیر زمان قتل کیس میں گرفتار ملزم کو بری کرنے کے احکامات جاری

  ڈاکٹر شیر زمان قتل کیس میں گرفتار ملزم کو بری کرنے کے احکامات جاری

  

ڈیرہ اسماعیل خان(بیورو رپورٹ)ماڈل کریمنل ٹرائل کورٹ کے جج عثمان ولی نے ڈاکٹر شیر زمان قتل کیس میں گرفتار ملزم استرانہ مروت کو کیس سے بری کرنے کے احکامات جاری کردئیے، ملزم کی جانب سے کورٹ میں شجاع اللہ ایڈوکیٹ ہائی کورٹ اور مقتول کی جانب سے محمد یوسف ایڈوکیٹ سپریم کورٹ پیش ہوئے۔ کیس کے حوالے سے کورٹ میں 5گھنٹے کی طویل بحث کی گئی، مذکورہ کیس میں ملک کے مشہور شریفاں بی بی برہنگی کیس کے مفرور اشتہاری ملزم سجاول نے بھی ایڈیشنل سیشن جج فسٹ کی عدالت میں مقتول ڈاکٹر شیر زمان کی جانب سے گواہی دی تھی، تھانہ چودھوان کی حدود میں 16جولائی2017ء کو گرہ عبداللہ سے آنے والے ڈاکٹر شیر زمان کو گرہ مٹ موڑ کے قریب ملزم استرانہ مروت سکنہ کھوئی بہارہ نے اغواء کرنے کی کوشش کی اس دوران ملزم نے مزاحمت پر ڈاکٹر شیر زمان کو قتل کردیا اور فرار ہوا، اس دوران 150افراد پر مشتمل مقامی چغہ پارٹی نے ملزم کو پکڑ کر چودھوان پولیس کے حوالے کیا تھا، ملزم سے آلہ قتل ایک کلاشنکوف بھی برآمد کی گئی تھی۔ عدالت میں پراسیکویشن کی جانب سے 27گواہ پیش ہوئے جبکہ چغہ پارٹی کے150افراد نے بھی گواہی دی، ملک کے مشہور شریفاں بی بی برہنگی کیس کے مفرور اشتہاری ملزم سجاول نے بھی ایڈیشنل سیشن جج فسٹ کی عدالت میں مذکورہ کیس میں گواہی دی تھی۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -