ملتان،ایڈیشنل آئی جی ساؤتھ پنجاب کی یادگار شہدا پر حاضری، دعائیں 

   ملتان،ایڈیشنل آئی جی ساؤتھ پنجاب کی یادگار شہدا پر حاضری، دعائیں 

  

  ملتان (وقا ئع نگار) ایڈیشنل انسپکٹر جنرل پنجاب پولیس جنوبی پنجاب انعام غنی نے کہا ہے کہ پولیس کے ہزاروں جوانوں نے  اپنی جانوں کی قربانی دیکر معاشرے میں امن برقرار کیا اور  عزم و حوصلے کی منفرد مثالیں قائم کیں۔انہوں نے کہا کہ ہر ایک شھید کی قربانی پولیس(بقیہ نمبر35صفحہ6پر)

 فورس کا مورال مزید بلند کرتی ہے ہمارے شھید محکمے ماتھے کا جھومر ہیں۔انعام غنی نے کہا کہ یوم شھداء  اس عزم کا دن ہے کہ معاشرے سے آخری برائی کے خاتمے تک پولیس اپنی جنگ جاری رکھے گی اور ہر جوان اپنی نسلوں کی حفاظت کیلئے جانیں قربان کرتا رہے گا.ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز یوم شہداء  کے موقع پر پولیس لائینز میں آمد کے موقع پر یادگار شھداء  پر حاضری دیتے ہوئے کیا۔اس موقع پر سی پی او حسن رضا خان بھی انکے ہمراہ تھے۔ایڈینشل آئی جی ساؤتھ پنجاب کی پولیس لائن آمد کے موقع پر پولیس کے چاک و چوبند دستے نے سلامی بھی پیش کی۔انعام غنی نے یادگار شھداء  پر کتابچے میں اپنے تاثرات بھی تحریر کئے.ایڈیشنل انسپکٹر جنرل پولیس ساؤتھ پنجاب انعام غنی نے یوم شھداء  کے موقع پر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ شھداء پولیس نے جانیں قربان کرکے بہادری کی عظیم مثال قائم کیں انکی قربانیوں کو ہر سطح پر تسلیم کرنے اور پولیس کے اقدامات کی حمایت کی ضرورت ہے۔انہوں نے کہا کہ شھداء کی فیملیز کی مکمل کفالت کیلئے ہر ممکن اقدامات کئے جارہے ہیں۔قبل ازیں صحافیوں کے سوالات کا جواب دیتے ہوئے انعام غنی نے کہا کہ ملتان اور بہاولپور میں ایڈیشنل آئی جی کا آفس ایک ہفتے میں فعال ہو جائے گا۔ملتان میں وزیراعلی پنجاب پولیس کے نئے سیٹ اپ کا جلد افتتاح کرینگے۔ایڈیشنل آئی جی نے مزید کہا کہ شہریوں کی شکایات کے ازالے کیلئے مقدمات کا فوری اندراج ممکن بناکر جرائم کنٹرول کرینگے۔جنوبی پنجاب میں پولیس کلچر تبدیل کرنے کیلئے موثر اقدامات پر عمل پیرا ہیں۔انعام غنی نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ پولیس سے متعلقہ اختیارات کی فراہمی کیلئے رول آف بزنس کی تبدیلی پر کام جاری ہے جس کے بعد جنوبی پنجاب کی عوام کو انصاف کی فراہمی کیلئے لاہور نہیں جانا پڑے گا۔انعام غنی کا کہنا تھا کہ تبدیلی تفتیش اور اپیلوں کی سماعت کا اختیار بھی مل گیا ہے اور ایڈینشل آئی جی ساؤتھ پنجاب آفس کو تمام مطلوبہ پوسٹیں بھی فراہم کردی گئی ہیں۔انعام غنی نے بتایا کہ جعلی پولیس مقابلے،تشدد اور خواتیں کی ہراسمنٹ کے واقعات کا تدارک کرینگے اس حوالے سے میرٹ پر پولیس افسران کی تعیناتی اور تفتیش ترجیح ہے۔ایڈیشنل آئی جی ساؤتھ پنجاب نے کہا کہ نئے تھانوں کا قیام،سیف سٹی پراجیکٹ اور پولیس انفراسٹرکچر کی بہتری کیلئے بھی اقدامات جاری ہیں جنوبی پنجاب میں 28 ہزار پولیس نفری انتہائی کم ہے جس میں اضافہ کیلئے حکومت سے بات کرینگے۔انعام غنی کا کہنا تھا کہ تھانوں میں نئی گاڑیاں اور وسائل کی فراہمی کے حوالے سے بھی جلد اچھی خبر ملے گی۔قبل ازیں سی پی او حسن رضا خان نے بریفننگ دیتے ہوئے کہا کہ یوم شھداء  ہمارے عزم کی تجدید کا دن ہے فرائض کی ادائیگی کے دوران ضلع ملتان کے  38 جوانوں نے اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کیا جس میں   پولیس کے 7 شہداء بم دھماکے میں شہید ہوئے۔جبکہ 14 پولیس اہلکار و افسران دوران پولیس مقابلہ شہید ہوئے۔حسن رضا خان نے کہا کہ 17 پولیس اہلکار و افسران ٹارگٹ کلنگ کے نتیجہ میں شہید ہوئے۔ان کا کہنا تھا کہ  پولیس شہداء کی عظیم قربانیوں کو خراج تحسین پیش کرنے کے لئے 4 اگست کو یوم شہیدا منایا جاتا ہے تاکہ یہ پیغام دیا جاسکے کہ پولیس اپنے شہداء  کی فیملیز کے ساتھ ہر دکھ سکھ میں ساتھ ہے۔سی پی او کا کہنا تھا کہ کرونا وبا کی صورت حال میں پولیس شہداء کے گھروں میں 2 لاکھ مالیت کا راشن پہنچایا گیا۔ آئی پنجاب کے حکم پر عید الفطر کے موقع پر شہداء  کی فیملیز میں 8 لاکھ مالیت کے عید گفٹس تقسیم کیئے گئے جبکہ  شہداء  کے بچوں کی تعلیم کے لیئے 100%سکالر شپ دیا جا رہا ہے اور  شہداء  کے بچوں کے تعلیمی اخراجات اور پک اینڈ ڈراپ کی سہولت سی پی او  کی جانب سے فراہم کی جاتی ہے۔جبکہ رول 2017 کے مطابق کانسٹیبل شہید کی فیملی کے لیئے 1 کروڑ 35 لاکھ مالیت کے گھر بھی خرید کر دیے جارہے ہیں تاکہ انکی کفالت کی جاسکے۔

انعام غنی

مزید :

ملتان صفحہ آخر -