اختیارات کی جنگ میں شدت: کنگ ایڈورڈ کالج حکام کا یونیورسٹی انتظامیہ کو کیمپس خالی کا پیغام 

اختیارات کی جنگ میں شدت: کنگ ایڈورڈ کالج حکام کا یونیورسٹی انتظامیہ کو کیمپس ...

  

 لاہور(جاوید اقبال)کنگ ایڈورڈ میڈیکل کالج اور کنگ ایڈورڈیونیورسٹی کی انتظامیہ میں اختیارات کی جاری جنگ میں شدت آگئی ہے کالج انتظامیہ نے یونیورسٹی انتظامیہ کو کیمپس خالی کرنے کا پیغام دیدیا ہے اس سلسلہ میں کالج انتظامیہ کو بورڈ آف مینجمنٹ کی بھی مکمل حمایت حاصل ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ کالج انتظامیہ نے کے ای میڈیکل یونیورسٹی انتظامیہ کو زبانی پیغام بھیجا ہے وہ وائس چانسلر کا دفتر اور سیکریٹریٹ خالی کر دیں اور اپنا نیا کیمپس کرائے کی بلڈنگ حاصل کریں یا کالا شاہ کاکو میں اپنی زمین پر عمارت تعمیر کریں اگر وہ فوری یہ نہیں کر سکتے تو یونیورسٹی کے نیو بلاک میں منتقل ہو جائیں جہاں عارضی طور پردفتر قائم کرنے کیلئے انہیں چند ماہ کیلئے کرایہ پر جگہ دی جا سکتی ہے۔کے ای میڈیکل کالج کی طرف سے یونیورسٹی انتظامیہ کو یہ بھی کہا گیا ہے کہ یونیورسٹی فیکلٹی (ٹیچنگ سٹاف)پراپرٹی اور دیگر ساز و سامان کالج کی ملکیت ہے لہٰذا وہ اپنے نئے دفتر میں کوئی چیز نہیں لے جا سکتے یہاں تک کہ فرنیچر بھی نہیں۔یونیورسٹی نے جو ایم بی بی ایس کے لئے داخلے کئے تھے وہ بھی میڈیکل کالج کو منتقل ہو چکے ہیں اگر یونیورسٹی انتظامیہ چاہے تو فیکلٹی سے صرف تین پروفیسر ساتھ لے جا سکتے ہیں۔ذرائع کا کہنا ہے کہ دوسری طرف کے ای یونیورسٹی نے موقف اختیار کیا ہے کہ وہ فی الفور یونیورسٹی کیمپس کسی اور جگہ منتقل نہیں کر سکتے اور یہیں رہیں گے کیونکہ بعض معاملات کی تشریح ہونا باقی ہے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ اس کے لئے کالج انتظامیہ نے محکمہ سپیشلائزڈ ہیلتھ سے مدد مانگ لی ہے کہ وہ وی سی سمیت ان کا دیگر سٹاف کسی اور جگہ منتقل کروانے میں ان کی مدد کرے تا کہ میڈیکل کالج پورے آب و تاب کے ساتھ تدریسی عمل شروع کر سکے۔اس حوالے سے یونیورسٹی اور کالج انتظامیہ کا کہنا ہے کہ ابھی کچھ طے نہیں ہو سکا۔دوسری جانب کالج کے بورڈ آف مینجمنٹ نے فوری طور پر ایم ٹی آئی ایکٹ کے تحت ڈین،میڈیکل ڈائریکٹر،ایم ایس،سی ای اواور چیف آپریٹنگ آفیسر،ڈائریکٹر فنانس کی پوسٹ فوری طور پر تشہیر کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

کنگ ایڈورڈ کالج

مزید :

صفحہ آخر -