ملتان:محکمہ صحت، آکسیجن  پلانٹ لگانے کا منصوبہ ٹھپ

ملتان:محکمہ صحت، آکسیجن  پلانٹ لگانے کا منصوبہ ٹھپ

  

 ملتان (وقا ئع نگار)محکمہ صحت کااپنے آکسیجن پلانٹ لگانیکامنصوبہ ٹھپ (بقیہ نمبر52صفحہ7پر)

کردیامحکمہ سپیشلائزڈ ہیلتھ کئیر نیآکسیجن جنریٹرز،آکسیجن کنسنٹریٹرز خریدنیکاٹینڈر منسوخ کردیا جبکہ کوروناوباکیدوران آکسیجن کااستعمال بڑھنے پر پلانٹ لگانیکافیصلہ کیاگیاتھا۔تفصیل کے مطابق محکمہ سپیشلائزڈہیلتھ نینامعلوم وجوہات کی بنیادپر آکسیجن جنریٹرز،آکسیجن کنسنٹریٹرزخریدنیکاٹینڈر منسوخ کردیا،جبکہ کورونا وبا کیدوران آکسیجن کااستعمال بڑھنے پر پلانٹ لگانیکافیصلہ کیاگیاتھا۔منصو بے مطابق ٹیچنگ ہسپتالوں کیلئے10آکسیجن جنریٹرز،200 آکسیجن کنسنٹریٹرزخرید جانے تھے، پنجاب میں 4کمپنیاں ہی علاج معالجیکیلئیمصنوعی آکسیجن تیار کرتی ہیں، طلب بڑھنے پرکمپنیوں کی 70 فیصد سے زائد پیداوار ہسپتالوں میں استعمال ہورہی ہے اور ہرسال اربوں مالیت سیمصنوعی آکسیجن گیس خریدتیہیں، محکمہ سپیشلائزڈہیلتھ کی جانب سیکورونا کیدوران آکسیجن کا استعمال بڑھنیپربروقت دستیابی کیلئے چھوٹے پیمانے پر پلانٹ لگانیکامنصوبہ تھا جس کے تحت 10آکسیجن جنریٹرز، 200 آکسیجن کنسنٹریٹرزخریدے جانے تھے۔محکمہ سپیشلائزڈ ہیلتھ کئیر کی جانب سے جاری ٹینڈر میں 18کمپنیوں نے حصہ لیا جبکہ ٹینڈرپیپرا رولز 35 کیتحت منسوخ کردیا گیا ہے،اس منصوبے سے حکومت کو سالانہ10ارب کی بچت اور ہسپتال ضرورت کیمطابق آکسیجن گیس بنانیکیاہل بھی بن سکتے تھے۔

منصوبہ ٹھپ

مزید :

ملتان صفحہ آخر -