محرم الحرام: شرپسند عناصر، سہولت کاروں کیخلاف سخت کارروائی کا فیصلہ 

محرم الحرام: شرپسند عناصر، سہولت کاروں کیخلاف سخت کارروائی کا فیصلہ 

  

ڈیرہ غازیخان،چوٹی زیریں (سٹی رپورٹر،نمائندہ خصوصی)وزیر قانون پنجاب راجہ بشارت نے کہا ہے کہ سوشل میڈیا سمیت ہر فورم پر مذہبی منافرت پھیلانے پر (بقیہ نمبر42صفحہ7پر)

سخت کارروائی ہوگی اور ڈپٹی کمشنر اپنے اضلاع میں ہر قسم کی وال چاکنگ کے خلاف سخت کارروائی کریں۔وہ آج اپنی زیر صدارت سول سیکرٹریٹ میں کابینہ کمیٹی برائے لا اینڈ آرڈر کے اجلاس میں ڈیرہ غازی خان ڈویژن میں محرم الحرام کے سیکیورٹی پلان کا جائزہ لے رہے تھے۔صوبائی وزیر کھیل تیمور بھٹی، آئی جی پولیس پنجاب، ایڈیشنل چیف سیکریٹری داخلہ،سیکریٹری بلدیات،اے آئی جیز سی ٹی ڈی و سپیشل برانچ،  اور دیگر افسران بھی موجود تھے جبکہ ایڈیشنل چیف سیکریٹری و ایڈیشنل آئی جی ساتھ پنجاب اور امن کمیٹیوں کے ارکان کی بذریعہ ویڈیو لنک شرکت کی۔ متعلقہ کمشنرز، آرپی اوز، ڈی پی اوز اور ڈپٹی کمشنرز  کی ویڈیو لنک کے ذریعے اپنے سیکیورٹی پلان پر بریفنگ دی۔ وزیر قانون نے کہا کہ ہم علما کرام کے شکر گذار ہیں کہ قیام امن میں ہمیشہ حکومت کا ساتھ دیا۔ انہوں نے ایڈیشنل چیف سیکریٹری و ایڈیشنل آئی جی ساتھ پنجاب کو   ہدائت کی کہ محرم کے دوران وہ جنوبی پنجاب کے تمام اضلاع میں سیکیورٹی انتظامات کی خود نگرانی کریں۔انہوں نے کہا کہ  یوم آزادی بھی آرہا ہے لہذا اس بات کا خیال رکھا جائے کہ کسی بھی حوالے سے محرم الحرام  کا تقدس مجروح نہ ہونے پائے۔ انہوں نے مزید کہا کہ نیشنل ایکشن پلان کے تمام نکات پر سختی سے عملدرآمد کرتے ہوئے دہشت گردوں کے مقامی سہولت کاروں کیخلاف سخت کارروائی کی جائے۔ راجہ بشارت نے کہا کہ محرم سے پہلے تعزیہ کے راستے سے تجاوزات ہٹانے، صفائی اور نکاسی آب پر خصوصی توجہ دی جائے اور اجتماعات اور جلوسوں میں کووڈ ایس او پیز پر سختی سے عمل کرایا جائے۔ آئی جی نے ہدائت کی کہ سوشل میڈیا پر مزہبی منافرت پر مبنی پوسٹ وائرل ہو تو اس کے خلاف  کی گئی حکومتی کارروائی بھی ساتھ وائرل ہونی چاہیے۔ اے سی ایس داخلہ نے کہا کہ سیکیورٹی کے حوالے سے حکومت کی جانب سے ہرقسم کا تعاون ملے گا۔دریں اثنا علما کرام نے یقین دہانی کرائی کہ تمام مسالک کے علما بھائی چارے میں متحد اور یکجا ہیں اور ان شائاللہ پہلے کی طرح محرم کے دوران امن رہے گا۔

راجہ بشارت

مزید :

ملتان صفحہ آخر -