تاشفین ملک کا لال مسجد اسلام آباد سے رابطوں کاا نکشاف، مولانا عبدالعزیز کے ساتھ تصاویر ملی ہیں : امریکی حکام

تاشفین ملک کا لال مسجد اسلام آباد سے رابطوں کاا نکشاف، مولانا عبدالعزیز کے ...
تاشفین ملک کا لال مسجد اسلام آباد سے رابطوں کاا نکشاف، مولانا عبدالعزیز کے ساتھ تصاویر ملی ہیں : امریکی حکام

  


لندن (مانیٹرنگ ڈیسک)امریکی ریاست کیلی فورنیا حملے کی مبینہ ملزمہ تاشفین ملک کے بارے میں بڑا انکشاف ہوا ہے کہ خاتونکے پاکستان  میں  لال مسجد سے رابطے تھے  جس کے شواہد امریکی سیکیورٹی اداروں کو تاشفین ملک کے گھر کی تلاشی کے دوران ملے ہیں اور مولانا عبدالعزیز کیساتھ تاشفین کی تصاویر بھی حاصل کرلی گئیں ، جس کے بعد اس کیس نے اپنا رُخ تبدیل کر لیا ہے ۔دوسری طرف یہ بھی اطلاعات ہیں کہ امریکی صدر باراک اوباما کا ’’خاص پیغام ‘‘ وزیر اعظم نواز شریف کو لندن میں پہنچایا گیا ہے تاہم وزیراعظم ہائوس کے ترجمان نے کسی امریکی نمائندے سے ملاقات یا پیغام رسانی کی تردید کردی۔

نجی ٹی وی چینل نے دعویٰ کیاہے کہ امریکہ سے تصاویر کا معاملہ سامنے آنے کے بعدوزیراعظم نوازشریف سےوزیراعلیٰ پنجاب شہبازشریف نے بھی ملاقات کی اور اس میٹنگ کے دوران کیلیفورنیا فائرنگ پر تبادلہ خیال اورملک میں جاری دہشتگردی کیخلاف آپریشن تیز کرنے کافیصلہ کیا گیاہے۔

امریکی اور برطانوی میڈیا کے مطابق ریاست کیلیفورنیا کے علاقے سان برنارڈینو میں ایک سوشل سینٹر پر حملہ کرنے والے خاتون تاشفین ملک نے فیس بک پر شدت پسند تنظیم دولتِ اسلامیہ کے رہنما کی بیعت کی تھی۔امریکی حکام کا کہنا ہے کہ رضوان فاروق کے ہمراہ حملہ کرنے والی خاتون تاشفین ملک نے فیس بک کے ایک دوسرے اکاونٹ کے ذریعے شدت پسند تنظیم دولتِ اسلامیہ کے رہنما سے وفاداری کے بارے میں پوسٹ کی تھی۔اطلاعات کے مطابق تاشفین ملک نے فیس بک پر شدت پسند تنظیم دولتِ اسلامیہ کے رہنما ابوبکر بغدادی کی حمایت میں ایک پیغام لکھا تھا جیسے بعد میں ہٹا دیا گیا۔اس حوالے سے جب دفترِ خارجہ کے ترجمان قاضی خلیل اللہ سے رابطہ کیا تو ان کا کہنا تھا کہ ابھی تو امریکی حکام خود اس بارے میں تفتیش کر رہے ہیں کہ اس واقعے کے محرکات کیا ہیں،انھوں نے اب تک ہم سے اس بارے میں کوئی رابطہ نہیں کیا ہے،جب وہ رابطہ کریں گے تو ہم معلومات جمع کرنے کی کوشش کریں گے۔اس سے قبل امریکی ٹی وی چینل سی این این نے یہ دعویٰ کیاتھا کہ تاشفین کا تعلق کالعدم تنظیم دولت اسلامیہ عراق و شام سے ہے اور وہ پاکستان سے تعلق رکھتی ہے تاہم امریکی ایجنسی ایف بی آئی نے اس واقعہ کو دہشتگردی قراردیتے ہوئے کہاہے کہ داعش سے تعلق ثابت نہیں ہوا۔ 

دوسری طرف یہ بھی دعویٰ سامنے آیاہے کہ لندن میں امریکی اہلکار نے وزیراعظم نوازشریف سے ملاقات کرتے ہوئے  تاشفین کے پاکستان میں رابطوں اور اب تک کی تفتیش سے آگاہ کرتے ہوئے امریکی صدر کا ’’خاص پیغام ‘‘ بھی پہنچایا ۔امریکی صدر باراک اوبامہ نے وزیراعظم نوازشریف کو لندن میں پیغام پہنچایا ہے کہ امریکی حکام کو کیلیفورنیا حملوں میں ملوث خاتون تاشفین کی لال مسجد کے خطیب مولوی عبدالعزیز کے ساتھ تصاویر ملی ہیں تاہم پاکستان میں وزیراعظم ہاؤس کے ترجمان نے کسی بھی امریکی سے رابطے یا ملاقات کی تردید کردی اور ایسی خبروں کو محض افواہیں قراردیدیا۔ 

واضح رہے کہ کیلیفورنیا کے شہر سین برنارڈینو کے علاقے واٹر مین ایونیو میں واقع معذوروں کی بحالی کے مرکز میں فائرنگ سے 14افراد ہلاک ہو گئے تھے جس کے بعد امریکی سیکیورٹی اداروں نے کارروائی کرتے ہوئے تاشفین اور رضوان کو دوران کارروائی ہلاک کر دیا تھا ۔

مزید : قومی /اہم خبریں