اقتصادی راہداری منصوبہ اور گوادر پراجیکٹس، چین نے سرمایہ کاری ’کرپشن فری‘ہونے کی خواہش ظاہر کردی

اقتصادی راہداری منصوبہ اور گوادر پراجیکٹس، چین نے سرمایہ کاری ’کرپشن ...
اقتصادی راہداری منصوبہ اور گوادر پراجیکٹس، چین نے سرمایہ کاری ’کرپشن فری‘ہونے کی خواہش ظاہر کردی

  


کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک) چین نے پاک چین اقتصادی راہداری منصوبے پر سرمایہ کاری کی ابتدائی کردی ہے اور اس منصوبے کی سیکیورٹی کی ذمہ داری پاک فوج نے اپنے ذمہ لے لی ہے تاہم اب چینی حکام نے منصوبے کو کرپشن فری یعنی بدعنوانی سے پاک کرنے کی خواہش کا بھی اظہار کردیا جبکہ خود چین کے اندر بھی کرپشن کیخلاف مہم چل رہی ہے ۔

دنیا نیوز پر کرنٹ افیئرز کے اپنے پروگرام میں گفتگوکرتے ہوئے کامران خان نے بتایاکہ اقتصادی راہدی منصوبے کی مد میں چین دوست ملک پاکستان میں 46ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کررہاہے اور امید ظاہرکی جارہی ہے کہ یہ منصوبہ پورے خطے کیلئے گیم چینجر ثابت ہوگا،پاکستان کی معاشی اور ملکی ترقی ہوگی ، اسی منصوبے کے تناظرمیں پاکستان نے بطورتحفہ چین کو دوہزار ایکڑزمین چین کے حوالے کی ہے ، چین گوادر ائیر پورٹ بھی بنا رہا ہے اور اسی طرح توانائی سمیت کئی دیگر منصوبوں پر بھی کام ہوگا۔

کامران خان کاکہناتھاکہ چین کی پاکستان میں اس قدر بڑی سرمایہ کاری دولحاظ سے بہت اہم ہے ، ایک توچینی حکام نے پورے منصوبے کی سیکیورٹی پر خدشات کا اظہار کیاتھا جس پر پاک فوج نے سیکیورٹی اپنے ذمہ لے لی اور ایک مکمل سیکیورٹی ڈویژن تشکیل دی جارہی ہے لیکن اس کے بعد چین کی جانب سے اس خواہش کااظہار بھی کردیاگیاکہ پورے ملک میں معاملات شفاف ہوں اور پاکستانی عوام نے بھی چینی خواہش پراطمینان کا اظہار کیااور 100فیصد عمل درآمد کامطالبہ کردیا۔ اُنہوں نے کہاکہ چین کے اندر بھی کرپشن کیخلاف ایک بڑی مہم چل رہی ہے اور چینی حکام نے گزشتہ دورہ پاکستان میں نیب حکام سے ملاقات کی اور اس بات پر زور دیاہے کہ منصوبے پر 46ارب ڈالر کی سرمایہ کاری صاف شفاف انداز میں ہونی چاہیے ۔ چینی حکام کے اس مطالبے پر اقتدار اور متعلقہ عہدوں پر موجود افسران خاصے پریشان دکھائی دیتے ہیں ۔

مزید : قومی