انسانی صحت کے لئے واحد متوازن خوراک

انسانی صحت کے لئے واحد متوازن خوراک
 انسانی صحت کے لئے واحد متوازن خوراک

  

آج کی بات نہیں جب سے انسان کو مرغی کے گوشت کے فوائد کا پتہ چلا۔ پولٹری انڈسٹری نے صحت مند گوشت کی فراہمی میں اپنا جاندار کردار بڑھایا اور برائلر مرغی نے انسان دوستی کے رشتے کو مضبوط بنایا ہے۔

اس مفید ترین صنعت کے خلاف سرحد پار سے مختلف بیماریوں کے نام پر افواہوں اور سازشوں کی زہریلی ہوائیں چلائی جا رہی ہیں۔

ایسی افواہوں کا واحد مقصد مرغی گوشت کے بارے میں خوف کا ماحول پیدا کرکے معیشت کے بڑے شعبہ میں سرمایہ کاری کو روکنا ہے اللہ تبارک و تعالی کا صد شکر کہ پولٹری انڈسٹری سے وابستہ محب وطن اور عوام دوست کاروباری افراد اور پولٹری سائنسدانوں نے اپنے علم تجربہ اور حقائق کی روشنی سے ہمیشہ عوام کو چکن کی افادیت و اہمیت سے بر وقت آگاہ کیا اور بتایا کہ مرغی کا گوشت انسان کو کون کون سی بیماریوں سے بچاتا اور انسان کو صحت مند بناتا ہے۔

وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ برا ئلر مرغی کے گوشت کی صفائی ستھرائی اور حفظان صحت کے معیار کے بارے میں عوام کو اس قدر پختہ یقین ہو چکا ہے کہ افواہ سازی کی فیکٹریاں بے کار ثابت ہو رہی ہیں۔

متوازن خوراک اور طاقت و توانائی کے لحاظ سے مرغی کا گوشت اس قدر مقبول، پسندیدہ اور عام آدمی کی قوت خرید کے مطابق ہے کہ اس کا کوئی متبادل نہیں ہے۔ دیگر گوشت اس قدر مہنگے ہیں کہ بیاہ شادیوں اور دیگر تقریبات میں اگر مرغی کا گوشت مہیا نہ ہو سکے تو گوشت کی ڈش دینا مشکل ہو جائے۔

موجودہ حالات میں مرغی کا گوشت مہیا ہونے کے باوجود بکرے کا گوشت ایک ہزار روپے کلو ،جبکہ گائے کا گوشت چار سو روپے سے زیادہ میں مل رہا ہے اگر کسی وجہ سے برائلر مرغی کا کردار کم ہو جا ئے تو عام آدمی کے لئے بکرے اور گائے کا گوشت پکانا اور کھانا ناممکن ہو جائے گا۔

مرغی کے گوشت کی قیمت میں اضافہ گوشت کی دیگر اقسام حتی کہ کھانے پینے کی دیگر اشیاء کی نسبت بہت کم ہوتا ہے۔ گزشتہ چند مہینوں میں پیاز ٹماٹر اور سبزیوں کی قیمتوں نے عام آدمی کو چکر ا کر رکھ دیا۔ اس دوران مرغی عام آدمی اور اس کے بچوں کے لئے ڈھارس کا باعث بنی۔

مرغی کی مقبولیت کے پیش نظر پولٹری انڈسٹری میں حوصلہ افزا حد تک سرمایہ کاری ہو چکی ہے۔ حکومتی ادارے اگر پولٹری انڈسٹری کی سرپرستی کرتے رہیں تو ملک کے اس معاشی شعبے میں سرمایہ کاری کا حجم مزید بڑھ سکتا ہے۔پاکستان میں برائلر مرغی کا گوشت عالمی معیار کے مطابق مہیا کیا جا رہا ہے۔

امریکہ اور یورپ میں بھی وہی مرغی کھائی جا رہی ہے جو پاکستان میں کھائی جاتی ہے۔ دنیا بھر میں برائلر مرغی کی نسل اور اس کی خوراک ایک جیسی ہے۔ پولٹری کے عالمی سائینسدانوں نے سخت محنت کرکے ایسی نسل تیار کی ہے جو کم از کم وقت میں اپنا وزن پورا کرتی اور کھانے کے قابل بن جاتی ہے۔ اس کی بڑی خوبی یہ ہے کہ برائلر مرغی کم خوراک کھا کر زیادہ گوست بناتی ہے۔

پاکستان میں برائلر مرغی کو وہی خوراک دی جاتی ہے جو اس کی عمر کے مطابق اس کی افزائش کے لئے ضروری ہے یہی وجہ ہے کہ برائلر مرغی صاف ستھرا صحت مند گوشت بناتی ہے اسے جدید کنٹرول روم میں رکھا جاتا ہے جہاں اسے صحت مند ماحول دیا جاتا ہے۔

درجہ حرارت نمی اور آکسیجن کا پورا بندوبست کیا جاتا ہے۔ چکن کے اندر موجود پروٹین انسانی جسم کی پرورش اور جوڑوں کو مضبوط بنانے میں مدد دیتی ہے۔ اس کے اندر موجود فاسفورس اور کیلیشیم ہڈیوں کو مضبوط بناتے ہیں۔ چکن کھانے سے انسان دل کی بیماریوں سے محفوظ اور کینسر کی بیماری کا اندیشہ کم از کم ہو جاتا ہے۔

مرغی کے گوشت میں موجودہ وٹا منز نظر کی بیماریوں سے محفوظ رہنے میں مدد دیتے ہی۔ کرہ ارض پر موجود تمام مسلمان ملکوں اور دیگر ملکوں میں موجود مسلمانوں کو علم ہے کہ پاکستان اسلام کے نام پر معرض وجود میں آیا ہوا ملک ہے۔پاکستان سے منگوایا ہوا حلال گوشت حقیقت میں حلال ہوگا۔

اس لئے اگر دیگر ملکوں میں موجود پاکستانی سفارت خانے جد وجہد کریں اور متعلقہ ملک کے عوام کو آگاہی دیں تو پاکستان کو حلا ل گوشت کی بہت بڑی مارکیٹ مل سکتی ہے پاکستان کی برآمدات اور زرمبادلہ کے ذخائر میں بے پناہ وسعت پیدا ہو سکتی ہے۔

مزید : کالم