آئی او سی نے پاکستانی خاتون ہاکی گول کیپر کو جنسی ہراساں کرنے کا نوٹس لے لیا

آئی او سی نے پاکستانی خاتون ہاکی گول کیپر کو جنسی ہراساں کرنے کا نوٹس لے لیا

لاہور(سپورٹس رپورٹر)انٹرنیشنل اولمپک کمیٹی نے پاکستان ہاکی ٹیم کی خاتون گول کیپر کو جنسی طور پر ہراساں کرنے کے معاملے کا نوٹس لے لیا۔انٹرنیشنل اولمپک کمیٹی نے پاکستان اولمپک ایسوسی ایشن سے رواں سال اکتوبر میں قومی ہاکی ٹیم کی گول کیپر سیدہ سعدیہ کو مبینہ طور پر جنسی ہراساں کئے جانے کے واقع کی مکمل تحقیقاتی رپورٹ طلب کر لی۔اولمپک کمیٹی کا موقف ہے کہ جنسی ہراسگی کے واقعے کی مکمل اور شفاف تحقیقات ہونی چاہیے اور اگر پاکستان اولمپک ایسوسی ایشن سمجھتا ہے کہ پی ایچ ایف کی تحقیقات مناسب نہیں تو وہ ازسر نو تمام تحقیق کرنے کا مجاز ہے۔یاد رہے کہ ہاکی فیڈریشن انٹرنیشنل اولمپک ایسوسی ایشن کے ماتحت ہے اور اس نے باقاعدہ اولمپک کے چارٹر پر دستخط کر رکھے ہیں جس میں خواتین کو جنسی ہراساں کرنے کے حوالے سے سخت موجود ہیں۔یاد رہے اکتوبر میں گوجرہ سے تعلق رکھنے والی سیدہ سعدیہ نے کوچ سعید خان پر جنسی طور پر ہراساں کئے جانے کا الزام لگایا تھا ۔بعد ازاں پی ایچ ایف ویمنز ونگ نے اس بارے میں ایک تحقیقاتی کمیٹی بنائی تھی اور کوچ کو گول کیپر کے الزامات سے بری قرار دیدیا تھا۔

مزید : کھیل اور کھلاڑی