ڈھائی ارب ڈالر کے بانڈز کی کامیاب فروخت حکومت کی کامیابی ہے ، میاں زاہدحسین

ڈھائی ارب ڈالر کے بانڈز کی کامیاب فروخت حکومت کی کامیابی ہے ، میاں زاہدحسین

کراچی(آن لائن)پاکستان بزنس مین اینڈ انٹلیکچولز فور م وآل کراچی انڈسٹریل الائنس کے صدر ،بزنس مین پینل کے سینئر وائس چیئر مین اور سابق صوبائی وزیر میاں زاہد حسین نے کہا ہے کہ حکومت کی جانب سے عالمی ڈیبٹ مارکیٹ میں ڈھائی ارب ڈالر کے بانڈز کی فروخت کے مثبت نتائج برآمد ہوئے ہیں۔پاکستان کے سیاسی حالات، امن و امان کی صورتحال اوردھرنوں وغیرہ کے باوجود غیر ملکی سرمایہ کاروں کی دلچسپی سے معلوم ہوتا ہے کہ وہ منفی رپورٹوں کو اہمیت دینے کو تیار نہیں

اور پاکستان کے مستقبل کے بارے میں خاصے پر امید ہیں۔عالمی ڈیبٹ مارکیٹ سے قرضہ لینا آئی ایم ایف کے مقابلہ میں کافی مہنگا پڑتا ہے مگر آئی ایم ایف کے قرضے کے ساتھ سخت شرائط بھی ہوتی ہیں جو ترقی کے سفر کو روک دیتی ہیں۔ میاں زاہد حسین نے یہاں جاری ہونے والے ایک بیان میں کہا کہ بین الاقوامی سرمایہ کاروں کے مثبت ردعمل میں چین کی جانب سے سی پیک میں بھاری سرمایہ کاری اور عسکری قیادت کی جانب سے سیاسی فضا کو معمول پر لانے اور دھرنوں کے خاتمے کی کوششوں نے بھی اپنا کردار ادا کیا ہے۔ڈھائی ارب ڈالرز کے بانڈز کی کامیاب نیلامی سے پاکستان پر قرضوں کے بوجھ میں بھی اضافہ نہیں ہو گا کیونکہ اسے پرانے قرضوں کی ادائیگی کیلئے استعمال کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ بانڈزکی نیلامی سے حکومت کے معاشی مسائل کم نہیں ہو نگے مگر اسے صورتحال بہتر بنانے کیلئے مہلت مل جائے گی۔نئے قرضے کے باوجود برآمدات و ترسیلات اور براہ راست غیر ملکی سرمایہ کاری کی کمی کے سبب زرمبادلہ کے زخائر بدستور دباؤ کا شکار رہیں گے مگر حکومت کو ادائیگیوں کا توازن متوازن بنانے کیلئے وقت مل جائے گاجس کا بہتر استعمال ہماری حکومت اور پالیسی سازوں کا امتحان ہو گا۔میاں زاہد حسین نے کہا کہ مہلت کو بہتر منصوبہ بندی کے تحت مناسب انداز میں استعمال کرنے اور تجارتی خسارہ کم کرنے کیلئے مثبت اقدامات کی ضرورت ہے۔حکومت اپوزیشن کی بڑھتی ہوئی مخاصمت اور(ن) لیگ کے مختلف رہنماؤں کیلئے بڑھتی ہوئی عدالتی و قانونی مشکلات کے باوجودبانڈز کے نیلام کے نتیجہ میں ملنے والی مہلت کو اقتصادی صورتحال بہتر بنانے کیلئے استعمال کرے ورنہ ساری کوششیں رائیگاں جائیں گی۔۔#/s#

مزید : کامرس