ملک میں اس وقت جوڈیشل مارشل لاء ہے، جاوید ہاشمی

ملک میں اس وقت جوڈیشل مارشل لاء ہے، جاوید ہاشمی

اسلام آباد (آن لائن) سینئر سیاستدان جاوید ہاشمی نے کہا ہے کہ ملک میں اس وقت جوڈیشل مارشل لاء لگاہوا ہے۔ سائبر کرائم کی طرح سپریم کورٹ کا استعمال ہوا، نواز شریف جمہوریت کے سالار ہیں۔ نواز شریف اس بار کسی قسم کا سمجھوتہ نہ کریں ۔ نواز شریف ہمت کر کے ڈٹ جائیں تو پارلیمنٹ کو آزاد کرایا جا سکتا ہے کوئی آدمی غلط فیصلے کو غلط کہے تو اسے ٹکراؤ نہیں کہتے۔ پیر کے روز نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے سینئر سیاستدان مخدوم جاوید ہاشمی نے کہا کہ نواز شریف نے ماضی میں جو سمجھوتے کئے تھے وہ ٹھیک نہیں ۔ سمجھوتے ہوتے تو جمہوریت کو تقویت ملتی۔ نواز شریف سے ملاقات کے دوران میں نے ڈکٹیٹروں کے خلاف جدو جہد کا ذکر کیا۔ ایک دو لوگ آ کر ملک کسی کے حوالے کر دیتے ہیں۔ ملک کو 10، 10سال پیچھے دھکیل دیا جاتا ہے۔ جاوید ہاشمی نے کہا کہ میں نے نواز شریف سے تمام گلے کئے ہیں۔ جب موقع ملتا ہے سیاستدانوں کی اہمیت کم کر دی جاتی ہے۔ میں تمام سیاستدانوں کا وکیل ہوں، کسی سیاست دانوں کے خلاف نہیں ہوں۔ میں نے نواز شریف کو کہا کہ آپ جمہوریت کے سالار ہیں آپ نے جمہوریت کے لئے لڑنا ہے۔ نواز شریف نے بھی یقین دلایا ہے کہ وہ کسی قسم کا سمجھوتہ نہیں کریں گے۔ ماضی میں نواز شریف کے سر پر پستول تان کر کہا گیا کہ آپ اسمبلیاں توڑ دیں۔ نواز شریف نے کہا کہ آپ مجھے گولی مار دیں میں اسمبلیاں توڑنے پر راضی نہیں ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان بھی آئین کے خلاف کام نہ کرتے تو بہتر ہوتا۔ عمران خان کے خلاف میں نے سازش نہیں کی۔ عمران خان نے بھی پارلیمنٹ کو بے وقعت کیا، نواز شریف کو بھی ریگولر اسمبلی میں جانا چاہئے تھا۔ میں تو عمران خان اور پارلیمنٹ کو بچا رہا تھا۔ نواز شریف ہمت کریں تو پارلیمنٹ آزاد ہو سکتی ہے۔ اس وقت ملک میں جوڈیشل مارشل لاء لگا ہوا ہے۔ سائبر کرائم کی طرح سپریم کورٹ کو استعمال کیا گیا۔

مزید : صفحہ آخر